امریکی سپورٹ بہت معمولی ، امداد کی بندش سے پاکستان کا بجٹ متاثر نہیں ہو گا گا : مفتاح اسماعیل

امریکی سپورٹ بہت معمولی ، امداد کی بندش سے پاکستان کا بجٹ متاثر نہیں ہو گا گا ...

  1. لاہور (کامرس رپورٹر) وزیر اعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ امریکی امداد کی بندش سے پاکستان کا بجٹ متاثر نہیں ہو گا کیونکہ امریکہ کی بجٹ کے لئے سپورٹ بہت معمولی ہے ، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پاکستان کو 33ارب ڈالر کی امداد کی بات غلط ہے ،وزیر خارجہ خواجہ آصف حقیقت بتا چکے ہیں کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے اخراجات 23ارب ڈالر کے ہوئے جس میں سے امریکہ نے کولیشن سپورٹ فنڈ کی مد میں صرف 14ارب ڈالر دئیے جبکہ 9ارب ڈالر کے بقایاجات ابھی باقی ہیں ، مسلم لیگ (ن) کی حکومت مدت پوری کر کے اقتدار چھوڑنے کے وقت کوشش کرے گی کہ بجٹ خسارہ جی ڈی پی کے مقابلے میں پانچ فیصد رہے ہم پیپلز پارٹی کی طرح اقتدار چھوڑتے ہوئے بجٹ خسارہ جی ڈی پی کے مقابلے میں 8.2فیصد پہنچا کر نہیں جائیں گے ، اپٹما بند صنعتی یونٹ کی بحالی کے لئے تجاویز دے حکومت ہر ممکن تعاون کرے گی۔ انہوں نے اس امر کا اظہار اپٹما ہاؤس میں عہدیدیداروں کے ساتھ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر اپٹما کے گروپ لیڈر گوہر اعجاز ، مرکزی چیئرمین عامر فیاض ، پنجاب کے چیئرمین علی پرویز سمیت دیگر موجود تھے ۔ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ گزشتہ مالی سال جی ڈی پی کی گروتھ 5.3فیصد رہی ، رواں مالی سال کوشش ہے کہ 6فیصد کی جی ڈی پی گروتھ حاصل کر لیں۔ بجٹ خسارے اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو کنٹرول کریں گے ، معیشت میں کہیں خطرہ نظر نہیں آرہا ، بیرون ممالک سے جیسے بھی تعلقات ہوں ہماری معیشت مضبوط ہے ، پاکستان چھوٹا نہیں بڑا ملک ہے ۔ صنعتکاروں کو بھرپور وسائل فراہم کریں گے ۔ رواں مالی سال دسمبر تک درآمدات میں 9.7فیصد گروتھ رہی جبکہ برآمدات میں 15فیصد اضافہ ہوا ۔ حکومت کے ریبیٹ پیکج اور سٹیٹ بینک کی جانب سے پاکستانی روپے کی قدر کی کمی کے اچھے اثرات مرتب ہوئے ہیں ، امید ہے پاکستان کی برآمدات میں اضافہ ہو گا ۔ انڈسٹری کو چار سال کی سخت محنت سے بجلی اور گیس کی بلا تعطل فراہمی یقینی بنائی ہے ا ن کے نرخوں میں کمی کریں گے ۔ انہوں نے پاکستان کے ذمے بیرون قرضوں کے حوالے سے کہا کہ بیرونی قرضوں کی ادائیگی کے حوالے سے ہم پر کوئی دباؤ نہیں ۔ پورے سال کے دوران 5.9ارب ڈالر کی ادائیگی کرنی ہے جس میں دسمبر تک 2.3ارب ڈالر دے چکے ہیں باقی 3.6ارب رہ گئے ہیں وہ بھی ادا کر دیں گے ۔

    مفتاح اسماعیل

مزید : صفحہ آخر