وزارت مذہبی امور 30دن کا سرکاری حج سکیم کاپیکیج بنانے میں ناکام

وزارت مذہبی امور 30دن کا سرکاری حج سکیم کاپیکیج بنانے میں ناکام

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)سرکاری حج سکیم 2018ء وزارت مذہبی امور 30دن کا پیکج بنانے میں ناکام ،سرکاری حج30دن کا ہونے کی وجہ سے سرکاری پیکج ایک لاکھ مہنگا ہو جائے گا،حج پالیسی میں ترمیم کی تجویز ،ہوپ نے بھی سرکاری سکیم 67فیصد اور پرائیویٹ سکیم 33فیصد کرنے کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے حج پالیسی میں ترمیم کرنے کا مطالبہ کر رکھا ہے ،ہوپ سرکاری اور پرائیویٹ سکیم پچاس پچاس فیصد رکھنے پر بضد ہے ان کا کہنا ہے کہ حج2017ء میں سرکاری سکیم کے ایک لاکھ7ہزار حجاج تھے سرکاری حجاج سخت مشکلات کا شکار رہے اور حج آپریشن بری طرح متاثر ہوااب بغیر منصوبہ بندی کے وفاقی وزیر حج2018ء میں کوٹہ ایک لاکھ20ہزار رکھنے کے لیے بضدہیں جو نا قابل عمل ہے۔ وزیر اعظم پاکستان نے حج پالیسی2018ء کی منظوری دیتے ہوئے سرکاری حج40دن سے کم کر کے 30دن کرنے کی تجویز دی تھی وزارت مذہبی امور کے نا تجربہ کار نئے سیکشن افسران سرکاری حج30دن کاکرنے میں ناکام ہو گئے ہیں،انہوں نے حج پالیسی کی سمری دوبارہ بنا کر کابینہ میں بھیجنے کی تجویز دی ہے ان کا کہنا ہے کہ سرکاری حج30دن کرنے پر حج پیکج ایک لاکھ مہنگا ہو جاتا ہے ،ائیر لائنز بھی 30دن کا پیکج کرنے پر تیار نہیں ہے اس لیے پیکج 30دن کی بجائے40دن کارکھا جائے،وزارت کے اہلکار سرکاری حج سکیم کا کوٹہ بھی بڑھانے کے حق میں نظر نہیں آ رہے،حج پالیسی دوبارہ وزیر اعظم کو ترمیم کے لیے بھیجی جا رہی ہے ۔

حج پیکیج

مزید : صفحہ آخر