وہاڑی نقل کرتے پکڑے جانے پر طالبعلم کی گھر جاکر مبینہ خودکشی

وہاڑی نقل کرتے پکڑے جانے پر طالبعلم کی گھر جاکر مبینہ خودکشی

 وہاڑی( بیورو رپورٹ+نما ئندہ خصوصی)گور نمنٹ پو سٹ گریجویٹ کالج کا بی ایس اکنامکس کے طالبعلم نے امتحان میں نقل کر تے ہوئے پکڑے جانے کے بعد مبینہ طور پر گھر میں جا کر خود کو گولی مارکر خو د کشی کرلی ، کا لج کے طلباء نے پروفیسررانا محمد صفدر کو طالبعلم کی خو د کشی کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے کالج بندکرکے احتجاج شروع کردیا ، کالج کے احاطہ میں کھڑی بسوں ، پروفیسرز کی گاڑیوں اور موٹرسائیکلز ، کالج کے مین گیٹ کی توڑ پھوڑ کرتے ہوئے کالج سے باہر نکل کر وہاڑی ملتان روڈ بلاک کرکے روڈ پر(بقیہ نمبر52صفحہ12پر )

سے گزرنے والی ٹریفک کو بھی لا ٹھیوں اور پتھراؤ کرکے نقصان پہنچا یا جیسے ہی انتظامیہ کو اس خطر ناک صورتحال کا اندازہ ہو ا تو پو لیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی پو لیس کے پہنچتے ہی طلباء میں اشتعال پیدا ہو گیا اور پو لیس پربھی پتھراؤ شروع کردیا اور آؤٹ سائیڈرز شرپسند عناصر نے موقع کا فا ئدہ اُٹھتے ہوئے طلباء کو احتجاج پر اکسا یا اور ہوائی فائرنگ کھل عام کرتے رہے جس پر مجبوراً پو لیس کو شیلنگ کرنا پڑی جس سے طلباء میں بھگڈر مچ گئی پو لیس نے درجن سے زائد سرپسند عناصر کو گرفتار کرلیا ،ڈی پی او عمر سعید ملک نے صحافیوں کو بتایا کہ گزشتہ روز 63ڈبلیوبی کے رہا ئشی طالبعلم شاہد مشتاق بی ایس اکنا مکس پیپر کے دوران چیکنگ کے وقت نقل کر تا ہوا پکڑا گیا جس پر سپرنٹنڈنٹ امتحانی مرکز رانا صفدر نے طالبعلم کے خلاف کیس بنایا اور امتحان سے با ہر بجھوا دیا لیکن آئندہ پیپر ز میں شرکت کی اجازت دے دی تھی لیکن طالبعلم نے مبینہ طور پر نا معلوم وجو ہات کی بنا ء پر اپنے گھر میں خود کو گولی مارکر خو د کشی کرلی ، ڈی پی او کا کہنا تھا کہ ہماری اطلاعات کے مطابق کچھ آؤٹ سائیڈرز شر پسند عناصر نے طلباء کو مشتعل کرکے احتجاج کروایا اور خود بھی احتجاج میں شامل ہو کر املاک کو نقصان پہنچا یا جس پر پو لیس کو بروقت کا روائی کرنا پڑی اور آنس گیس کی شیلنگ کرکے احتجاجی مظاہرین کو منتشر کردیا اور موقع سے درجن سے زاہد شرپسند عناصر کو گرفتار کرلیا پرنسپل گورنمنٹ پو سٹ گریجو یٹ کا لج رانا محمد یعقوب نے صحافیوں کو بتایا کہ طالبعلم کی خود کشی کا امتحان سے کوئی تعلق نہیں تھا بلکہ کالج کے طالبعلموں کاکہنا ہے کہ خو د کشی کرنے والاطالبعلم گزشتہ کئی رورز سے کسی پریشانی میں مبتلا تھا سپر نٹنڈنٹ امتحانی مرکز رانا محمد صفدر کا کہنا ہے کہ خود کشی کرنے والے طالبعلم شاہد مشتاق اور اس کے دوست جوکہ نقل کرنے میں اسکی معا ونت کرتے پا یا گیا تھا دونوں کو صرف ایک پیپر سے با ہر بجھوا یا گیا تھا جبکہ با قی پیپرز میں امتحان دینے کی اجازت دے دی گئی تھی احتجاجی طلباء سے ڈی سی علی اکبر بھٹی ، اے سی سید آصف حسین شاہ ، ڈی ایس پی فضل بخاری نے بھی مذاکرات کرنے کی کوشش کی لیکن آؤٹ سائیڈرز نے تمام کوششوں پر پانی پھیر دیا پو لیس تھانہ سٹی نے شرپسند عناصر کے خلاف مقدمہ درج کرکے دیگر ملزمان کی گرفتار ی کیلئے چھا پے مارنے شروع کردیئے ہیں ڈی پی او کا کہنا ہے کہ کسی سے بھی رعایت نہیں کی جا ئے گی کالج کے امن کو تباہ کرنے والوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جا ئے گا #

طالبعلم خودکشی

مزید : ملتان صفحہ آخر