باغبان آم کے باغات کو کورے سے بچانے کیلئے ہدایات پر عمل کریں،ماہرین

باغبان آم کے باغات کو کورے سے بچانے کیلئے ہدایات پر عمل کریں،ماہرین

لاہور(اے پی پی )باغبان آم کے باغات کو کورے سے بچانے کیلئے محکمہ زراعت کی ہدایات پر عمل کریں،ترجمان محکمہ زراعت پنجاب کی طرف سے آم کے باغبانوں کو ہدایت کی ہے کہ موجودہ سرد موسم میں آم کے پودوں کو کورے سے بچانا نہایت ضروری ہے،ترجمان نے بتایا کہ سردیوں میں جب دن کے وقت ٹھنڈی ہوا شمال کی سمت سے چلے، ہوا شام کے وقت ساکت ہو اور تمام رات ساکت ہی رہے،جب رات کو مطلع صاف ہو اور بادل بالکل نہ ہوں تو ان راتوں میں کورا پڑنے کے امکانا ت بہت بڑھ جاتے ہیں، ان علامات میں اگر پودوں کوکو را سے محفوظ رکھنے کیلئے مناسب حکمت عملی نہ اپنائی جائے تو آم کے چھوٹے پودوں اور نرسری کو زیادہ نقصان پہنچنے کا احتمال ہوتا ہے۔

،انہوں نے ہدایت کی کہ نرسری میں آم کے پودوں کو شیشم وغیرہ کی شاخوں سے اس طرح ڈھانپیں کہ پودوں پر دن کے وقت سورج کی روشنی بھی پڑتی رہے،کورا پڑنے والی ممکنہ راتوں میں ہلکی آبپاشی کرنے سے زمین کا درجہ حرارت بڑھ جاتا ہے اس طرح زمینی درجہ حرارت میں کوئی تبدیلی واقع نہیں ہوتی اور پودے کورا کے نقصان سے بھی محفوظ رہتے ہیں،آم کی نرسری کو کوراسے بچانے کا ایک اور موثر طریقہ پودوں کو پلاسٹک سے ڈھانپ دینا بھی ہے، باغ میں جب آم کا پودا پانچ فٹ سے بڑا ہو جائے تو اسے 5فیصدچونے کا سپرے کریں،اس طرح چونے کی ایک پتلی تہہ پتوں اور شاخوں پر بن جاتی ہے جوکہ کورا کے اثرات کو کم کرتی ہے، باغات میں پودوں کی عمر کے مطابق پودوں کے گھیرے میں گلا سڑا گوبر بکھیرنے سے زمینی درجہ حرارت میں تبدیلی کو روک کر کورے کے ممکنہ نقصان سے کافی حد تک بچا جا سکتا ہے، بڑے پودوں کے تنوں پر سفیدی کریں اور چھوٹے پودوں کے تنوں پر پرالی وغیرہ باندھ دیں مزید براں انہیں پٹ سن کے کپڑے سے لپیٹ کر بھی کورے ا ورسردی سے محفوظ رکھا جا سکتا ہے، پودوں کی غذائی ضروریات کا خاص خیال رکھیں تاکہ پودے تندرست و توانا رہیں، آج کل مارکیٹ میں کورا سے بچاؤ کے لئے استعمال ہونے والے مختلف مرکبات بھی دستیاب ہیں ،کوراسے متاثرہ پودوں کی فوری طور پر کانٹ چھانٹ بالکل نہ کریں۔

مزید : کامرس