جندول‘ ثمر باغ ہسپتال میں طبی سہولیات کا فقدان

جندول‘ ثمر باغ ہسپتال میں طبی سہولیات کا فقدان

جندول(نمائندہ پاکستان) سب ڈویژن جندول ٹی ایچ کیو ہسپتال ثمرباغ میں صحت کی بنیادی سہولیت کا فقدان ہسپتال میں کروڑوں روپے کی لاگت کی جدید مشینری ناکار ہوتے جارہی ہے ایمرجنسی کی سولر سسٹم ناکار ہونے کی علاوہ ایمرجنسی مریض کیلئے ایک سرانج بھی سرکاری میسر نہیں ہے ہسپتال کا برا حال رات کو تمام وارڈزمیں مریضوں کی لوحقین ممباتیاں جلانے پر مجبور رہتے ہے سیاسی قائدین ہسپتال کی دورے کی وقت بڑے بڑے اعلانات کرکے سلفی بناکر چلے جاتے ہیں اور بعد میں غائب ہوجاتے ہے۔زرئع کی مطابق 2005 میںآٹھ کروڑ چھوبیس لاکھ کی لاگت سے بنایا گیا جدید مشینری پر مالا مال ٹی ایچ کیو ہسپتال ثمرباغ میں مریضوں کیلئے صحت کی بنیادی ضروریات میسر نہیں ہے اسلئے لواحقین مریضوں کو پرئیویٹ ہسپتالوں میں ہزاروں روپے کا علاج کروانے پر مجبور رہتے ہیں ہسپتال کی ایمرجنسی یونٹ میں ایمرجنسی مریض کیلئے ایک سرانج بھی سرکاری میسر نہیں ہے ہسپتال میں کروڑوں لاگت کی مشینری کسی بھی بیماری کی حالات میں مریض کی کام نہیں اسکا ایمرجنسی سولر سسٹم ناہونے کی برابر ہے جن پر حکومتی وقت کی نمائندوں نے خاموشی اختیار کرلیا ہے زرئع کی مطابق ٹی ایچ کیو ہسپتال ثمرباغ کا منظور کردہ جرنیٹر کو کسی اور جگہ استعمال ہونے لگا ہے مزید یہ کہ صوبائی حکومت صحت کی مد میں بڑے بڑے وعدے کرتے جاراہی ہے مگر موجودہ حکومت نے غریب عوام سے پرانا سرکاری علاج بھیچین لیا ہے جو قابل تشویش ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر