محکمہ سیاحت ، معدنیات اور جنگلات کے درمیان قانونی پیچدگیاں دور کرنے کی ہدایت

محکمہ سیاحت ، معدنیات اور جنگلات کے درمیان قانونی پیچدگیاں دور کرنے کی ہدایت

پشاور (سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخواہ کے سینئر وزیر برائے سیاحت،ثقافت،آرکیالوجی، کھیل وامورنوجوانان عاطف خان نے محکمہ سیاحت،معدنیات اور محکمہ جنگلات کے درمیان قانونی پیچیدگیاں دور کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ تینوں محکمے حصول آمدن کے بہترین ذرائع ہیں تینوں شعبوں کو ترقی دیکر صوبے کو مالی طور پر مستحکم کیا جاسکتا ہے۔ یہ ہدایت انہوں نے محکمہ جنگلات، سیاحت اور محکمہ معدنیات کے درمیان قانونی پیچیدگیاں دور کرنے کے حوالے سے بنائی گئی کمیٹی کی پہلی جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کی۔کمیٹی وزیر اعلی خیبر پختونخوا کی خصوصی ہدایت پر محکموں کے درمیان قانونی پیچیدگیاں ختم کرنے کے لئے بنائی گئی ہے۔اجلاس میں وزیر معدنیات ڈاکٹر امجد علی خان،وزیر جنگلات اشتیاق ارمڑ وزیر قانون سلطان محمد خان اور متعلقہ اداروں کے انتظامی سیکرٹریزبھی موجود تھے۔اجلاس میں پہلے مرحلے میں صوبے کے چھ جگہوں پر محکمہ جنگلات اور معدنیات کے درمیان قانونی پیچیدگیاں ختم کرنے لئے سب کمیٹی بنائی گئی جو محکمہ سیاحت،جنگلات، معدنیات محکمہ قانون اور متعلقہ ضلعوں کے ڈپٹی کمشنرز پر مشتمل ہوگی۔کمیٹی دو ہفتوں کے اندر اندر مذکورہ چھ جگہوں کا دورہ کرکے رپورٹ پیش کریگی۔اجلاس میں نئے سیاحتی مقامات کی تعمیر میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کیلئے مختلف محکموں کے درمیان کوآرڈینیشن اور رابطے بڑھانے پر بھی غور ہوا۔سینئر وزیر نے کہا کہ سیاحت کو ترقی دیکر صوبے سے غربت کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے۔سینئر وزیر نے درپیش قانونی پیچیدگیاں دور کرنے کے لیے محکموں کو آپس میں مل کر کام کرنے کی ہدایت کی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر