کیس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے،ملزموں کے پاس موقع ہے تفتیش کاروں کے سامنے پیش ہو کر خودکو بیگناہ ثابت کریں،چیف جسٹس پاکستان

کیس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے،ملزموں کے پاس موقع ہے تفتیش کاروں کے سامنے ...
کیس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے،ملزموں کے پاس موقع ہے تفتیش کاروں کے سامنے پیش ہو کر خودکو بیگناہ ثابت کریں،چیف جسٹس پاکستان

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )چیف جسٹس ثاقب نثار نے جعلی بینک اکاﺅنٹس میں ریمارکس دیئے ہیں کہ کیس کومنطقی انجام تک پہنچائیں گے،ملزمان اس بات کوکیوں نہیں سمجھتے ان کے پاس کلیئرہونے کاموقع ہے،تفتیش کاروں کے سامنے پیش ہوکرخودکوبےگناہ ثابت کردیں،ہم جے آئی ٹی کاسکوپ بڑھادیں گے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بنچ جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس کی سماعت کر رہا ہے،اٹارنی جنرل نے 172 افراد کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کے حوالے سے وضاحت پیش کردی۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہم رپورٹ پرکمنٹس نہ کریں توبہترہے،ہم معاملہ نیب کوبھجواناچاہتے ہیں،جے آئی ٹی رپورٹ بے بنیادنہیں،سندھ میں ایسے ٹھیکے دیکھے جوکاغذوں میں مکمل ہوئے،جے آئی ٹی نے بھی ایسے ہی ٹھیکوں کاذکرکیاہے۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ جنہوں نے 50ہزارنہیں دیکھاان کے اکاو¿نٹس میں 8کروڑفرشتے ڈال گئے؟ہم کیس کومنطقی انجام تک پہنچائیں گے،ملزمان اس بات کوکیوں نہیں سمجھتے ان کے پاس کلیئرہونے کاموقع ہے،تفتیش کاروں کے سامنے پیش ہوکرخودکوبےگناہ ثابت کردیں،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہم جے آئی ٹی کاسکوپ بڑھادیں گے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد