گزشتہ پانچ سال کے دوران اسلام آباد میں بچوں سے زیادتی کے کتنے واقعات ہوئے؟ سینیٹ کی کمیٹی کے اجلاس میں ایسا انکشاف کہ اراکین بھی دم بخود رہ گئے

گزشتہ پانچ سال کے دوران اسلام آباد میں بچوں سے زیادتی کے کتنے واقعات ہوئے؟ ...
گزشتہ پانچ سال کے دوران اسلام آباد میں بچوں سے زیادتی کے کتنے واقعات ہوئے؟ سینیٹ کی کمیٹی کے اجلاس میں ایسا انکشاف کہ اراکین بھی دم بخود رہ گئے

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے حوالے سے گزشتہ روز سینیٹ کمیٹی میں ایسا ہوشربا انکشاف سامنے آیا ہے کہ اراکین بھی دم بخود رہ گئے۔ ڈیلی ڈان کے مطابق بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں اضافے کے مسئلے پر بنائی گئی سینیٹ سپیشل کمیٹی میں بتایا گیا کہ گزشتہ 5سال میں اسلام آباد میں 560بچوں کے ساتھ زیادتی کی گئی۔ ان میں سے 300کیس رجسٹرڈ ہوئے جبکہ 260غیر رجسٹرڈ رہے۔

این جی او ساحل کی طرف سے مرتب کی گئی اس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 2018ءکی پہلی ششماہی میں 2017ءکی پہلی ششماہی کی نسبت بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں 32فیصد اضافہ ہوا ہے۔ ڈیلی ڈان سے گفتگو کرتے ہوئے وزارت انسانی حقوق کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ صرف گزشتہ ایک سال میں بچوں کے ساتھ زیادتی کے 3ہزار 445کیس رپورٹ ہوئے۔ یہ اعدادوشمار غیرسرکاری تنظیموں نے مہیا کیے تھے۔

سینیٹ سپیشل کمیٹی کی کنوینئر نزہت صادق نے وزیربرائے انسانی حقوق شیریں مزاری کی میٹنگ میں غیرحاضری پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ”بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات میں اضافہ انتہائی اہم معاملہ ہے لیکن وفاقی وزیر شیریں مزاری نے انتہائی غیرسنجیدگی کا مظاہرہ کیا اور کمیٹی کے آخری سیشن میں بھی شرکت نہیں کی۔“وفاقی پولیس کے حکام نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ”اسلام آباد سے 2016ءمیں دو لڑکیاں اغواءہوئی تھیں، وہ تاحال بازیاب نہیں کرائی جا سکیں۔ “

مزید : علاقائی /اسلام آباد