فیول پرائس ایڈ جسٹمنٹ بجلی بلوں میں ”کرنٹ“ صارفین کو سکتہ، صورتحال سنگین

فیول پرائس ایڈ جسٹمنٹ بجلی بلوں میں ”کرنٹ“ صارفین کو سکتہ، صورتحال سنگین

  



ملتان (سٹاف رپورٹر) بجلی بلوں میں فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ (ایف پی اے) سرچارج نے صارفین کو مالی بوجھ تلے دبا کررکھ دیا ہے۔ صارفین گزشتہ تین ماہ سے مسلسل ہزاروں روپے کے اضافی بل ادا کررہے ہیں۔ جبکہ حکومت، وزارت توانائی، نیپرا اور پاکستان الیکٹرک پاور کمپنی (پیپکو) کی جانب سے اقدامات نہ ہونے کی وجہ سے صارفین کی پریشانی میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ صارفین کے مطابق اکتوبر، نومبر، دسمبر2019ء کے شدید موسم(بقیہ نمبر15صفحہ12پر)

سرما میں بجلی کے استعمال کی قیمت چند سو روپے ہے جبکہ ایف پی اے سرچارج کی مد میں دو ہزار پانچ ہزار روپے کی رقم بلوں میں شامل ہے۔ ان تین ماہ کے دوران سہ ماہی ایڈجسٹمنٹ کی اضافی رقم نے بھی صارفین کو مالی مسائل سے دوچار کردیا ہے۔ اکتوبر، نومبر، دسمبر2019ء کو بجلی بلوں میں جولائی، اگست، ستمبر 2019ء کے ایف پی اے سرچارج کی رقم شامل کی گئی جبکہ جنوری 2020ء میں بھی ایف پی اے سرچارج کا بجلی بم صارفین پر 1.56 روپے فی یونٹ اضافے کی صورت میں گرادیا گیا ہے۔ بجلی صارفین کے بلنگ بیج(BATCH) دن میں ایف پی اے سرچارج شامل ہونے سے صارفین بدستورایف پی اے کے بحران سے دوچار ہیں اور رہیں گے۔

بجلی بل

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...