بارش: ریلوے کوارٹرز کی چھتیں خراب، ملازمین پر موت کا سایہ، اہل خانہ خوفزدہ

بارش: ریلوے کوارٹرز کی چھتیں خراب، ملازمین پر موت کا سایہ، اہل خانہ خوفزدہ

  



ملتان(نمائندہ خصوصی) دو روز سے جاری بارش نے ریلوے ملازمین کی زندگی داو پر لگا دی،خستہ حال کوارٹرز کی چھتیں ٹپکنے لگیں،ریلوے انتظامیہ کی مبینہ غفلت ملازمین کے لئے وبال جان بن گئی، ریلوے ملازمین موت کے سائے میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں، تفصیلات کے مطابق ملتان شہر اور گردونواح میں گزشتہ دو روز سے جاری بارش کی وجہ سے ریلوے ملازمین کے کوارٹرز کی چھتیں ایک بار پھر ٹپکنا شروع ہو گئیں،شدید سردی میں (بقیہ نمبر46صفحہ7پر)

رہائش پذیر ملازمین اور اہل خانہ بارش کا پانی نکالتے رہے اور چھت نہ گرنے کی دعائیں کرتے رہے،اس حوالے سے ریلوے ورکرز یونین کے عہدیداران اجمل چوہدری،سلیم چشتی اور دیگر کا کہنا تھا کہ ریلوے ملازمین کی تنخواہوں سے ماہانہ 5 فیصد کٹوتی کرنے کے باوجود بھی ریلوے کوارٹرز کی مرمت پر توجہ نہیں دی جا رہی - جس کی وجہ سے سینکڑوں کوارٹرز ٹوٹ پھوٹ اور خستہ حالی کا شکار ہیں - ٹوٹے پھوٹے کوارٹرز، گری ہوئی دیواریں، ٹپکتی چھتیں ملازمین اور ان کے اہل خانہ کے لئے خوف کی علامت بن چکی ہیں - شدید آندھی اور بارش کی صورت میں اکثر دیواریں گرنے اور چھتیں ٹپکنے کی شکایات سامنے آتی ہیں - اس صورتحال کے حوالے سے ریلوے ملازمین کی جانب سے بارہا حکام بالا کو درخواستیں دی گئیں مگر کوئی شنوائی نہیں ہوئی - اکثر ریلوے ملازم اپنی مدد آپ کے تحت ہی مرمتی کام کروانے پر مجبور ہیں - ریلوے ملازمین نے الزام عائد کیا کہ ان کی تنخواہوں سے کٹوتی کی گئی رقم افسران اپنی محل نما رہائش گاہوں کی تزئین و آرائش پر خرچ کر دیتے ہیں جبکہ ان کے خستہ حال کوارٹرز کی مرمت کے لئے فنڈز جاری نہیں کئے جاتے - اگر ریلوے انتظامیہ کٹوتی فنڈ کے کروڑوں روپے کوارٹرز کی حالت سدھارنے پر لگاتی تو آج ان کوارٹرز کی حالت بہتر ہوتی - ملازمین نے مطالبہ کیا کہ خستہ حال ریلوے کوارٹرز کا مرمتی کام جلد شروع کروایا جائے تاکہ وہ سکون سے زندگی گزار سکیں۔

بارش

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...