افغان تاجروں کو ایک سال کا تجارتی ویزہ جاری کیا جائیگا،زاہد نصر اللہ

  افغان تاجروں کو ایک سال کا تجارتی ویزہ جاری کیا جائیگا،زاہد نصر اللہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)گذشتہ دنوں پاکستان افغانستان جائنٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی افغانستان کے شہر کابل میں ہونیوالی پاک افغان ٹریڈ اینڈ اکنامک کنکٹیویٹی (Pak Afghan Trade and Economic Connectivity) میٹنگ میں پاکستان اور افغانستان کے مابین باہمی تجارت کے فروغ ٗ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کے نئے معاہدے پردونوں جانب کی بزنس کمیونٹی کے تحفظات دور کرنے ٗ ٹرانزٹ ٹریڈ کا معاہدہ‘افغانستان پاکستان ٹرانزٹ ٹریڈ ایگریمنٹ (APTTA)میں 1965ء کے معاہدے کے طرح اپٹا کے معاہدے میں بھی سہولیات دینے پر نظرِ ثانی‘ دونوں جانب کی طرف سے باہمی تجارت کی رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے لیزان کمیٹی کاقیام‘تجارتی وفود کے تبادلے ٗ پاکستان اور افغانستان میں سرمایہ کاری کے فروغ‘کراچی سے پشاور/چمن میں بذریعہ پاکستان ریلوے ٹرانزٹ ٹریڈکی دوبارہ گڈز کی بحالی‘ SRO121میں ترمیم کر کے کنٹینرز کے ساتھ ساتھ لوز کارگو کی اجازت‘کراچی سے افغانستان بانڈڈ کیرئر کی مناپلی کرایوں میں اضافہ‘دونوں جانب سے فریش فروٹ،ڈرائی فروٹ،پیراشیبل آئٹم کی ویلیوایشن میں اضافہ پر نظرِثانی‘پاکستان افغانستان بزنس کمیونٹی کے ویزوں میں سہولتیں ملٹی پل ویزوں کا اجراء اور حکومتی سطح پر دونوں جانب کی بزنس کمیونٹی کو سہولیات کی فراہمی سمیت متعدد اقدامات پر اتفاق ہوا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان افغانستان جائنٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر زبیر موتی والا کی سربراہی12رکنی وفد نے پاک افغان جائنٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سابق سینئر نائب صدرضیاء الحق سرحدی‘بورڈ ڈائریکٹرزنعمان الحق ٗانجینئر سید محمود‘قاضی زاہد حسین‘خالد عبداللہ خان‘محمدعقیل منیار‘ پراجیکٹ ڈائریکٹر(سی آر ایس ایس) عزت علی‘راجہ جنید خان‘ایم شعیب‘ زبیر احمداور جائنٹ چیمبر کی سیکرٹری جنرل فائزہ زبیر سمیت جائنٹ چیمبر کی دیگر اراکین نے افغانستان کا دورہ کیا اورکابل میں منعقدہ اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس میں افغانستان میں پاکستان کے سفیرزاہد نصراللہ اور ٹریڈکمرشل قونصل ڈاکٹر محمد یوسف نے خصوصی طور پر شرکت کی۔افغانستان کی جانب سے پاک افغان جوائنٹ چیمبر آف کامرس(افغان چیپٹر) کے صدرخان جان الکوزی‘افغانستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری(ACCI) کے نائب صدر الحاج محمد یونس مہمندڈائریکٹر جنرل ٹریڈ پالیسی منسٹری آف کامرس سلیمان بن شاہ‘وائس چیئر مین سرمایہ کاری‘سلطان محمد صافی‘ حاجی رحیم الدین‘ازرخش حافظی‘نورولی یعقوبی‘نظام الدین تاجزادہ‘ضیا الدین اچکزئی‘سید زمان ہاشمی‘پاک افغان جائنٹ چیمبر کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر نقیب اللہ صافی‘ ننگرہار سے زلمی عظیمی‘ نوید بشریار‘حاجی عبیداللہ‘ حاجی آغا‘اکنامک ایڈوائزر حبیب اللہ خان شنواری کے علاوہ افغانستان کے دیگر صوبوں سے تاجروں کے نمائندہ تنظیموں نے شرکت کی۔جبکہ دونوں جانب سے مسائل کے حل کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدمات اٹھانے کے لئے دونوں حکومتوں کو تجاویز دی گئیں۔اس موقع پر اجلاس میں پاکستان کے سفیر زاہد نصراللہ نے پاکستانی سفارت خانہ میں ویزوں کے اجراء کا اعلان کیا۔اوراجلاس میں موجود تاجروں کے نمائندوں کو یقین دلایا کہ افغان تاجروں کو ایک سال کا تجارتی ویزہ بھی جاری کیاجائیگا۔اور اسی طرح پشاور میں افغان قونصلیٹ دوبارہ سے کھول دیا جائے گا اورملٹی پل ویزوں کا اجراء کیا جائے گا۔دریں اثنا وزارتِ کامرس اینڈ انویسمنٹ کے ڈپٹی منسٹراجمل عبدالرحیم زئی‘وزارتِ اُمورِ خارجہ کے سیکرٹری‘ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل عبدالناصر یوسفی‘ وزارتِ ٹرانسپورٹ کے ڈائریکٹر جنرل حسین مبارک عزیزی‘وزارتِ خزانہ کے ڈائریکٹر جنرل نوید بشر یار‘ ڈائریکٹرجنرل اکنامک کارپوریشن موفاصدیق رسولی اور ڈائریکٹرجنرل کسٹمز منسٹری آف فنانس محمد عمر مہمندسے الگ الگ ملاقاتیں کیں اور پاک افغان باہمی تجارت میں مشکلات کے حوالے سے کھل کر تبادلہ خیال کیاگیا۔تاکہ دونوں ممالک کے تاجروں کو درپیش مسائل ایک میکنیزم کے تحت حل کئے جاسکیں۔افغانستان کے دورے سے واپسی پر پاکستان افغانستان جائنٹ چیمبر کے سابق سینئر نائب صدرضیاء الحق سرحدی نے کابل کے دورے کو دونوں ممالک کے مابین باہمی تجارت کے فروغ کے لئے سنگ میل قرار دیا اور کہا کہ دونوں جانب کی بزنس کمیونٹی کو تجارت سے متعلقہ سہولیات کی فراہمی کیلئے اہم پیش رفت سامنے آئی ہے۔جس سے دونوں جانب کی بزنس کمیونٹی کو خاطر خواہ فوائد حاصل ہونگے اور دونوں ممالک میں سرمایہ کاری کو فروغ حاصل ہوگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر