شہریوں کے مال وجان کا تحفظ اولین ترجیح ہے،سی سی پی او

شہریوں کے مال وجان کا تحفظ اولین ترجیح ہے،سی سی پی او

  



پشاور(کرائمز رپورٹر) کپیٹل سٹی پولیس پشاورشہریوں کے جان و مال کے تحفظ کے لئے کوشاں ہے، مذہبی تہواروں سمیت محرم الحرام اور عید میلاد النبی کے موقع پر پولیس کی جانب سے فول پروف سکیورٹی انتظامات کئے جاتے ہیں، شہر کے تمام مساجد، امام بارگاہوں سمیت اقلیتی عبادتگاہوں کی حفاظت کے لئے اہم اقدامات اٹھائے گئے ہیں جس کے تحت عبادتگاہوں سمیت مختلف بازاروں کا از سر نو سکیورٹی آڈٹ کر کے سفارشات کی روشنی میں اضافی نفری تعینات کی گئی ہے، شہر میں امن و امان کے قیام کو یقینی بنانے کی خاطر تمام مسالک سے رابطے میں ہیں، شہر کی سکیورٹی کی خاطر تمام مسالک کے علماء کرام، مشائخ عظام اور سول سوسائٹی کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، ان خیالات کا سی سی پی اومحمد علی گنڈا پور نے گزشتہ روز امامیہ جرگہ کے نمائندہ وفد کے ساتھ ملاقات کے دوران کیا تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ملک سعد شہید پولیس لائن پشاور میں سی سی پی او محمد علی گنڈا پور نے امامیہ جرگہ کونسل پشاور کے نمائندہ وفد کے ساتھ ملاقات کی ہے، اس موقع پر ایس ایس پی آپریشن، ایس پی ہیڈ کوارٹرز خان خیل، ایس پی سٹی محمد شعیب اور ایس پی سکیورٹی عنایت علی شاہ بھی موجود تھے، سردار سجاد حسین کی سربراہی میں آنے والے وفد میں مولانا ارشاد خلیلی، ثمین جان،مظفر علی اخونزادہ سمیت دیگر عہدیدار شریک تھے، اس موقع پر سی سی پی او محمد علی گنڈا پور نے شرکاء سے بات چیت کرتے ہوئے واضح کیا کہ پشاور پولیس کی جانب سے شہریوں سمیت تمام مسالک سے تعلق رکھنے والے علماء کرام کے جان و مال کی حفاظر کے لئے تمام وسائل کو بروئے کار لایا جا رہا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ شہر میں واقع مساجد، امام بارگاہوں سمیت اقلیتی برادری کے مذہبی مقامات کی سکیورٹی کو فول پروف بنانے کی خاطر تمام عبادتگاہوں اور مختلف بازاروں کا از سر نو سکیورٹی آڈٹ کر کے سفارشات کی روشنی میں پولیس نفری میں اضافہ کیا گیا ہے، انہوں نے شہر میں امن و امان کی صورتحال کو قائم رکھنے میں امامیہ جرگہ کونسل، سمیت علماء کرام اور سول سوسائٹی کے کردار کو سراہا، ملاقات کے دوران شرکاء نے شہر کے امن و امان کی خاطر پولیس کی جانب سے کئے گئے انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا جبکہ اس ضمن میں مختلف تجاویز اورسفارشات پیش کرتے ہوئے پولیس کے ساتھ بھر پور تعاون کا عزم ظاہر کیا

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...