ڈیرہ میں دوہرے اندھے قتل کا ڈراپ سین،2 گرفتار

ڈیرہ میں دوہرے اندھے قتل کا ڈراپ سین،2 گرفتار

  



ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)ڈیرہ پولیس نے جدید طریقہ تفتیش کی مدد سے 3ماہ قبل تھانہ گومل یونیورسٹی کے علاقہ میں ہونے والے دوہرے اندھے قتل کیس کا سراغ لگا لیا، دو قاتل گرفتار، ملزمان کے قبضے سے مقتول انعام اللہ کی کتابیں اور واردات میں ہونیوالاموٹر سائیکل بھی برآمد۔تفصیلات کے مطابق ڈیرہ پولیس نے جدید طریقہ تفتیش کی مدد سے3ماہ قبل تھانہ گومل یونیورسٹی کے علاقہ میں ہونے والے دوہرے اندھے قتل کیس کا سراغ لگا اس اندھے قتل کیس میں ملوث دو ملزمان کو گرفتار کرکے۔ پولیس ذرائع کے مطابق 3ماہ قبل 2اکتوبر2019کو تھانہ گومل یونیورسٹی میں جماعت اسلامی پروآ کے سابق مقامی امیر ثناء اللہ تریلی ولد ملک بہاول سکنہ پہوڑ نے اپنے17سالہ بھائی فسٹ ائیر کے طالب علم انعام اللہ کی گنشدگی کی رپورٹ درج کرائی تھی کہ وہ کالج سے گھر واپس نہیں آیا، مدعی کے مطابق اس کا بھائی لنڈہ اڈہ سے محمد ارشاد ولد شاہ نواز سکنہ پہوڑ کے ساتھ موٹر سائیکل پر سوار ہوکر گھر آتے دیکھا گیا تاہم بعد ازاں اس کی نعش نالہ پانی چشتی ملی جس پر پولیس نے مقدمہ نمبر483 مورخہ02.10.2019 جرم302 ت پ تھانہ گومل یونیورسٹی قائم تھا۔ مقدمہ کے اندارج کے اگلے روز محمد ارشاد ولد شاہ نواز سکنہ پہوڑ کی نعش بھی ملی۔ اس دوہرے اندھے قتل کیس کا سراغ لگانے کیلئے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے قابل پولیس افسران پر مشتمل ایک ٹیم تشکیل دی۔ سراغ رساں ٹیم میں شامل تکینیکی ماہرین نے خیبر پختونخوا کے جدید ذرائع سے ہم آہنگم نظام سے استفادہ حاصل کرکے شب و روز محنت سے دوہرے اندھے قتل کیس میں ملوث ملزمان شرافت علی ولد محمد رمضان سکنہ روڈہ اور خضر حیات ولد اللہ وسایا سکنہ روڈہ کو ٹریس کرکے گرفتار کرلیا۔ دوران تفتیش گرفتار ملزم شرافت علی سے موقع کی نشاندہی کراتے ہوئے وقوعہ میں استعمال ہونی والی موٹر سائیکل اور مقتول انعام اللہ کی کتابیں بھی برآمد کرلی گئیں۔ پولیس کے مطابق گرفتار ملزمان سے مزید تفتیش جاری ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر