”آپ مجھے پر اعتماد کر سکتے ہیں“ جرمنی کی ہر دلعزیز چانسلر انجیلا ڈوروتھیامرکل عالمی سیاست کی طاقتور ترین خاتون شخصیت

”آپ مجھے پر اعتماد کر سکتے ہیں“ جرمنی کی ہر دلعزیز چانسلر انجیلا ...

  



ناصرہ عتیق

پولش جرمن نژاد انجیلا ڈوروتھیامرکل (Angela Dorothea Merkel)گزشتہ 14برس سے یورپ کے اہم ترین ملک جرمنی میں چانسلر کا منصب سنبھالے ہوئے ہیں۔ چانسلر انجیلا مرکل 2005ء سے اب تک جرمنی کے سیاسی و حکومتی امور کی دیکھ بھال بہ احسن و خوبی کر رہی ہیں۔ وہ 2021ء میں اپنے عہدے سے سبکدوش ہوں گی۔ تاہم انہوں نے اپنے عہدے میں مزید وسعت کا عندیہ نہیں دیا۔ البتہ اکتوبر 2018ء میں چانسلر انجیلا نے اعلان کیا تھا کہ وہ پارٹی کی رہنما کے طور پر کام کریں گی، نہ ہی 2021ء میں چانسلر کے عہدہ کے لئے تگ و دو کریں گی۔ وہ خود کو تعلیم و تحقیق کے لئے وقف کرنا پسند کریں گی۔ حال ہی میں یورپی یونین کی فی الواقعہ رہنما چانسلر انجیلا مرکل کو دنیا کی طاقتور ترین اور آزاد دُنیا کی عظیم رہنما قرار دیا گیا ہے۔

لگ بھگ چالیس برس قبل تک جرمنی میں کوئی بھی خاتون اپنے خاوند کی رضامندی کے بغیر ملازمت نہیں کر سکتی تھی۔ بہت کم جرمن خواتین آپ کو سیاست و معیشت میں اونچے عہدوں پر دکھائی دیں گی۔ جرمن تہذیب و روایات میں عورت کے روایتی کردار کو چار الفاظ میں ظاہر کیا گیا ہے جو Kسے شروع ہوتے ہیں۔ Kunder یعنی بچے، Kircheچرچ، Kucheکچن اور Kleider یعنی پہناوے۔ یہ چاروں الفاظ عورت کی بنیادی ذمہ داریوں سے متعلق ہیں۔ جرمن معاشرے میں عورت گھر گرہستی کا مرکزی نقطہ ہے۔ اس کی ذمہ داریوں میں بچوں کی پیدائش اور ان کی نگہداشت کرنا ہے۔ مذہبی سرگرمیوں کا دھیان رکھنا ہے، خوراک اور کھانا پکانے کی طرف توجہ دینا ہے اور فیشن اور اپنے لباس کا خیال رکھنا ہے۔ بیسویں صدی میں البتہ یہ کردار قدرے تبدیل ہوا اور 1919ء میں ووٹ کا حق پانے کے بعد خواتین نے مردوں کے شانہ بشانہ کام شروع کر دیا تھا۔

دوسری جنگ ِ عظیم میں جرمن عورتوں نے بے حد مظالم سہے۔ جرمنی کے شہر راکھ ہوئے اور زندگی کے مصائب اپنی پوری برہنگی کے ساتھ سارے ملک میں عیاں ہوئے۔ جرمنی دو حصوں میں بٹ گیا۔ مشرقی اور مغربی جرمنی، مغربی جرمنی آسودہ حال تھا تو مشرقی جرمنی کسی قدر بے حال۔ بہرحال جرمن قوم محنتی اور جفاکش ہے۔ اس قوم نے اپنے ملک کو اپنے پاؤں پر اس طرح کھڑا کیا کہ آج جرمنی یورپی یونین کا سرخیل ہے۔

چانسلر انجیلا مرکل 17جولائی 1954ء کو مغربی جرمنی کے شہر ہیمبرگ میں پیدا ہوئی تھیں۔ چھوٹی عمر میں والدین کے ہمراہ مغربی سے مشرقی جرمنی منتقل ہو گئیں۔ والد کا تعلق کلیسیا سے تھا۔ مشرقی جرمنی میں تعلیم مکمل کی اور 1986ء میں کوانٹم کیمسٹری میں ڈاکٹریٹ حاصل کی۔ 1989ء میں ریسرچ سائنس دان کے طور پر کام کیا۔ اس دوران ان کے بے شمار تحقیقی مقالے سائنسی جریدوں میں شائع ہوئے۔ 1977ء میں انجیلا کی شادی اُلرچ مرکل (Ulrich Merkel) سے قرار پائی اور وہ انجیلا کاسز سے انجیلا مرکل بن گئیں۔ ان کی شادی 1982ء تک برقرار رہی۔ علیحدگی کے باوجود چانسلر انجیلا مرکل نے اپنے شوہر کا نام بطور سابقہ برقرار رکھا۔ 1998ء میں چانسلر انجیلا مرکل نے ایک کوانٹم کیمسٹ جاؤثم سوئر (Jaochim Sauer) سے شادی کرلی۔ ان کے دوسرے شوہر نمود و نمائش سے اجتناب کرتے اور میڈیا کی چمک دمک سے دور رہتے ہیں۔ 1989ء میں انجیلا مرکل نے سیاست کا رخ کیا۔ تاہم جرمنی کی سیاست میں ان کی اصل فعالیت سقوطِ دیوارِ برلن اور جرمنی کے دوبارہ متحد ہونے سے شروع ہوتی ہے۔

1991ء میں جرمنی کے نامور چانسلر ہلمٹ کوہل نے انجیلا مرکل کی خداداد صلاحیتیں بھانپتے ہوئے انہیں وفاقی وزیر برائے خواتین و نوجواناں مقرر کر دیا۔ 1994ء میں وہ وفاقی وزیر برائے ماحولیات، تحفظ قدرتی ورثہ اور ایٹمی تحفظ مقرر ہوئیں۔ مختلف سیاسی اتار چڑھاؤ کے بعد انجیلا مرکل بالآخر 2005ء میں جرمنی کی پہلی خاتون چانسلر مقرر ہو گئیں۔2007ء میں چانسلر انجیلا مرکل یورپین کونسل کی صدر تعینات ہوئیں اور یوں انہوں نے یورپی معاملات میں اپنی لیاقت کی دھاک بٹھائی۔

چانسلر انجیلا مرکل مشرقی جرمنی میں اپنے قیام کے دوران کارل مارکس یونیورسٹی لائپزگ میں خاصی فعال اور متحرک تھیں۔ انہیں روسی زبان میں مہارت حاصل ہے۔ روسی زبان اور حساب میں انہوں نے کئی انعام حاصل کئے۔

22نومبر 2005ء میں انجیلا مرکل نے چانسلر آف جرمنی کا عہدہ سنبھالا تھا۔ ان کی مہم بیروزگاری کے خلاف تھی۔ اس ضمن میں انہوں نے اَن تھک کام کیا۔ مہاجرین کے مسئلہ بارے انہوں نے انسانی ہمدردی کے کسی بھی پہلو کو نظر انداز نہیں کیا۔ چانسلر انجیلا مرکل نے خارجہ امور کی طرف بھرپور توجہ دی۔ یورپی اتحاد کو کامیاب اور بین الاقوامی معاہدات کو مضبوط بنایا۔ عالمی سیاست میں چین کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے چین کے کئی دورے کئے۔

چانسلر انجیلا مرکل ایک ہر دلعزیز شخصیت ہیں۔ جرمنی میں انہیں ماں (Mutti) کے لقب سے پکارا جاتا ہے۔ چانسلر شپ کے اختتام کے بعد وہ اکادمیہ میں جانا پسند کرتی ہیں۔وہ فٹ بال کے کھیل کی بے حد شوقین ہیں۔ ان کی پسندیدہ فلم مشرقی جرمنی کی تیار کردہ ”لیجنڈ آف پال اینڈ پاؤلا“ ہے۔ چانسلر انجیلا مرکل کو کتوں سے خوف آتا ہے۔1995ء میں ایک کتے نے ان پر حملہ کر دیا تھا، تب سے وہ کتوں سے دور رہنے لگیں۔ 2007ء میں روس کی ولادی میرپوٹن، ایک ملاقات کے دوران اپنا کتا ساتھ لے آئے۔ ان کا مقصد چانسلر انجیلا مرکل کو ڈرانا نہیں تھا، لیکن چانسلر انجیلا مرکل نے تبصرہ کیا۔ ”مَیں سمجھتی ہوں انہوں نے ایسا کیوں کیا۔ یہ ثابت کرنے کے لئے کہ وہ مرد ہیں، حالانکہ وہ اپنی کمزوریوں سے خوفزدہ ہیں“۔

مذہب کے بارے میں چانسلر انجیلا مرکل کے خیالات واضح ہیں۔ ان کے خیال میں جرمنی ”اسلامی شدت“ میں مبتلا نہیں،بلکہ عیسائیت سے متعلق بے یقینی کا شکار ہے۔

2021ء چانسلر انجیلا مرکل کے منصب کا آخری سال ہے۔ تب تک مفروضے اور قیاس آرائیاں جنم لیتی رہیں گی۔ ان کا ایک قول لوگوں میں بہت مقبول ہے۔

”آپ مجھ پر اعتماد کر سکتے ہیں۔ آپ کو علم ہے کہ آپ میرے ساتھ کس مقام پر کھڑے ہیں“۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ ایام اب ماضی کا حصہ ہیں جب ہم لوگوں پر بھروسہ کر سکتے تھے۔

2021ء میں بہرحال چانسلر انجیلا ڈوروتھیا مرکل کے قدموں کے نشان پر چلنے والے کو اپنے پاؤں یقینا بہت بڑے جوتوں میں سمانا پڑیں گے۔

مزید : ایڈیشن 1