گینگ ریپ کاالزام لگانے والی لڑکی کو مرضی سے بدکاری کے جرم میں سزاسنادی گئی

گینگ ریپ کاالزام لگانے والی لڑکی کو مرضی سے بدکاری کے جرم میں سزاسنادی گئی
گینگ ریپ کاالزام لگانے والی لڑکی کو مرضی سے بدکاری کے جرم میں سزاسنادی گئی

  



نیکوسیا(ڈیلی پاکستان آن لائن)قبرص میں برطانوی لڑکی کے ساتھ اسرائیلی سیاحوں کے گینگ ریپ کے کیس کی سماعت ہوئی جس کا فیصلہ سناتے ہوئے عدالت نے لڑکی کو جھوٹا قراردے دیا۔

قبرص میں19 سالہ برطانوی لڑکی نے گزشتہ سال جولائی میں مقدمہ دائر کیا تھا کہ اسے اسرائیلی سیاحوں نے گینگ ریپ کا نشانہ بنایا ہے تاہم عدالت کے مطابق وہ اس الزام کو ثابت نہیں کرسکیں اورجھوٹ بولنے پر عدالت نے انہیں چار ماہ قید کی سزاسنادی ۔گارڈین کے مطابق عدالت نے کہا ہے کہ’ یہ گینگ ریپ نہیں بلکہ مرضی سے کی گئی بدکاری ہے‘۔

عدالت نے پندرہ سے بائیس سال تک کی عمر کے اسرائیلی گینگ کو اپنے گھروں کو واپس جانے کی اجازت دے دی۔عدالت نے قرار دیا کہ لڑکی چاہے تو جیل کے بجائے اپنے ملک برطانیہ واپس جاسکتی ہے۔

عدالتی فیصلے پر خواتین کے حقوق کے لئے کام کرنے والی تنظیموں نے شدید احتجاج کیا ہے، مظاہرین میں اسرائیل سے تعلق رکھنے والی خواتین کی تنظیم بھی شامل تھی جس کاکہناتھاکہ عدالت کو شرم آنی چاہئے جس نے عوامی مقامات پر بدکاری کاالزام لگاکرمتاثرہ خاتون کو ہی سزاسنا دی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی


loading...