روشن سندھ پروگرام مبینہ کرپشن انکوائری،شرجیل میمن کی عبوری ضمانت میں20 جنوری تک توسیع

روشن سندھ پروگرام مبینہ کرپشن انکوائری،شرجیل میمن کی عبوری ضمانت میں20 جنوری ...
روشن سندھ پروگرام مبینہ کرپشن انکوائری،شرجیل میمن کی عبوری ضمانت میں20 جنوری تک توسیع

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد ہائیکورٹ نے روشن سندھ پروگرام مبینہ کرپشن انکوائری میں شرجیل میمن کی عبوری ضمانت میں 20 جنوری تک توسیع کردی،عدالت نے شرجیل میمن کو 10 جنوری کونیب کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کردی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں پی پی رہنما شرجیل میمن کی سندھ روشن پروگرام مبینہ کرپشن میں عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت ہوئی، شرجیل میمن کی درخواست پر سماعت جسٹس عامر فاروق اور جسٹس لبنیٰ سلیم پرویز نے کی،شرجیل میمن کے وکیل لطیف کھوسہ ایڈووکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ نیب سندھ نے پہلے اس کیس میں مکمل انکوائری کی،نیا آرڈیننس آیا ہے، اس کے تناظر میں بھی درخواست دائر کی ہے،جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ آپ کیسے کہہ سکتے ہیں کہ نیب انکوائری نہیں کرسکتا،سردار لطیف کھوسہ نے کہاکہ نیب ترمیمی آرڈیننس کے مطابق ہماری درخواست کال اپ نوٹس کے خلاف ہے۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسارکیاکہ نیب کیوں بلا رہا ہے؟ سردارلطیف کھوسہ نے کہاکہ نیب نے کال اپ نوٹس جاری کرکے شرجیل میمن کو10 جنوری کو بلایا ہے، نیب پراسیکیوٹر نے کہاکہ شرجیل میمن کو سوالنامہ دیا گیا تھا جس کا جواب نہیں آیا،عدالت نے شرجیل میمن کے وکیل کو ہدایت کی کہ آپ پیش ہوکر جواب دیں۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے شرجیل میمن کی عبوری ضمانت میں 20 جنوری تک توسیع کردی اورشرجیل انعام میمن کو 10 جنوری کونیب کے سامنے پیش ہونےکی ہدایت کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...