معروف قانون دان فخرالدین جی ابرہیم انتقال کرگئے

معروف قانون دان فخرالدین جی ابرہیم انتقال کرگئے
معروف قانون دان فخرالدین جی ابرہیم انتقال کرگئے

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)معروف قانون دان اور سابق چیف الیکشن کمشنر فخرالدین جی ابراہیم طویل علالت کے بعد کراچی میں 91برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔

 تفصیلات کے مطابق معروف سینئر قانون دان فخرالدین جی ابراہیم ایک عرصے سے شدید علیل رہنے کے بعد آج اپنے خالقِ حقیقی سے جا ملے۔مرحوم سابق چیف الیکشن کمشنر سمیت کئی اہم عہدوں پر تعینات رہے ،فخر الدین جی ابراہیم معروف قانون دان، آئینی ماہر، سپریم کورٹ کے سینئر ایڈووکیٹ، سابق وزیر قانون، سابق اٹارنی جنرل آف پاکستان، سپریم کورٹ کے سابق جج اور سابق گورنر سندھ کے اہم عہدوں پر فائض رہ چکے تھے۔فخرالدین جی ابراہیم 2فروری 1928 کو ہندوستان کے شہر گجرات میں ایک لوئر مڈل کلاس فیملی میں پیدا ہوئے اور 1952 میں برطانیہ سے قانون کی ڈگری حاصل کی۔فخر الدین جج ابراہیم سپریم کورٹ کے جج رہنے کے ساتھ ساتھ سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس، گورنر سندھ، اٹارنی جنرل اور وفاقی وزیر قانون کے عہدوں پربھی فائز رہ چکےتھے۔فخر الدین جی ابراہیم کو14 جولائی 2012 کوالیکشن کمیشن پاکستان کا سربراہ مقررکیاگیااورپاکستان کے عام انتخابات2013ان ہی کی سربراہی میں ہوئے،تحریک انصاف اوردوسری جماعتوں نےانتخابات میں دھاندلی کی شکایت کی پھرپاکستان کےصدارتی انتخابات 2013 تنازع کا شکار ہوئے اور پیپلز پارٹی نے سخت تنقید کی جس کے بعد فخر الدین جی ابراہیم نے صدارتی انتخابات کے فوری بعد 31 جولائی 2013 کو استعفی دے دیا۔ اہم عہدوں پر فائض رہنے والےفخرالدین جی ابراہیم ایک عرصے سے علیل   تھے اور بالآخر 7جنوری کو خالق حقیقی سے جا ملے۔ فخر الدین جی ابراہیم سپریم کورٹ کے جج کے علاوہ، سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس، گورنر سندھ، اٹارنی جنرل اور وفاقی وزیر قانون کے عہدوں پر بھی فائز رہ چکے ہیں جب کہ وہ 1981 میں سپریم کورٹ کے ایڈہاک جج بھی رہے،فخرالدین جی ابراہیم نے 1981 میں جنرل ضیاالحق کے دور میں پی سی او کے تحت حلف اٹھانے سے انکار کردیا تھا۔ گورنر، اٹارنی جنرل اور وزیر قانون کے عہدوں سے انہوں نے حکومت سے اختلافات کے بعد استعفی دیا ،سی پی ایل سی کا ادارہ انہی کی مرہون منت قائم ہوا اوروہ امن و امان کے حوالے سے سرگرم کارکن تھے۔

مزید : قومی


loading...