صوبائی کابینہ کا 23 واں اجلاس،بند شوگرملیں 10جنوری تک چلانے کا حکم

صوبائی کابینہ کا 23 واں اجلاس،بند شوگرملیں 10جنوری تک چلانے کا حکم
صوبائی کابینہ کا 23 واں اجلاس،بند شوگرملیں 10جنوری تک چلانے کا حکم

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ گنے کے کاشتکاروں کا کسی صورت استحصال نہیں ہونے دیں گے،گنے کے کاشتکاروں کو اُن کی محنت کا پورا معاوضہ دلایا جائے گا، 10 جنوری تک بند شوگر ملیں ہر صورت چلائی جائیں جبکہ محکمہ خوراک اور محکمہ زراعت صورتحال پر کڑی نظر رکھیں۔

تفصیلات کے مطابق سردار عثمان بزدارکی زیرصدارت وزیراعلیٰ آفس میں صوبائی کابینہ کا 23 واں اجلاس منعقد ہوا، اجلاس میں سیکرٹری خوراک نے کابینہ کو گنے کے کرشنگ سیزن کے بارے میں بریفنگ دی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے مستقبل میں گنے کی صورتحال کی مانیٹرنگ کیلئے کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے اس ضمن میں قانون سازی کا عمل بھی جلد مکمل کیا جائے اور کابینہ کمیٹی برائے لیجسلیٹو قانون سازی کے کام کو جلد نمٹائے۔ صوبائی وزراء اپنے علاقوں میں کرشنگ سیزن کی مانیٹرنگ کریں اور انتظامی افسران متعلقہ اضلاع میں گنے کے کاشتکاروں کے حقوق کا تحفظ یقینی بنائیں، پنجاب کابینہ کے اجلاس میں ویمن ہوسٹل اتھارٹی کے قیام کا فیصلہ کیا گیا اور کابینہ نے ویمن ہوسٹل اتھارٹی کے قیام کی منظوری دی۔ پنجاب کابینہ نے بینک آف پنجاب کے صدر کیلئے عاطف باجوہ کے تقرر کی منظوری دے دی،اجلاس میں پنجاب میں تشکیل دینے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیموں  کی ایکس پوسٹ فیکٹو منظوری دینے کا فیصلہ کیا گیااورکابینہ سب کمیٹی برائے امن وامان کو مشترکہ تحقیقاتی ٹیموں کی ایکس پوسٹ فیکٹو منظوری کیلئے اختیار دے دیا گیا۔کابینہ سب کمیٹی برائے امن و امان مشترکہ تحقیقاتی ٹیموں کا جائزہ لے کر ایکس پوسٹ فیکٹو منظوری دے گی اورمستقبل میں تشکیل دی جانے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیموں کی تشکیل کا اختیاربھی کابینہ سب کمیٹی برائے امن و امان کو ہوگا۔ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں پنجاب کے کالجوں میں ای روز گار سنٹرز کے قیام کا فیصلہ کیا گیا اور کابینہ نے کالجو ں میں ای روزگار سنٹرز کے قیام کے فیصلے کی منظوری دی۔ اجلاس میں پنجاب کے انڈسٹریل سٹیٹس اور سپیشل اکنامک زونز میں سیل ڈیڈکیلئے سپر سٹرکچر ٹیکس ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور کابینہ نے سپر سٹرکچر ٹیکس سے استثنیٰ کی منظوری دے دی۔

پنجاب کابینہ نے چلڈرن ہسپتال اور دی انسٹی ٹیوٹ آف چائلڈ ہیلتھ ملتان کیلئے بورڈ آف مینجمنٹ کے قیام کی منظوری دی جبکہ ایڈیشنل چیف سیکرٹری کی سربراہی میں قائم کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں مختلف پوسٹوں کو اپ گریڈکرنے کا ایجنڈا موخر کر دیا گیا۔اجلاس میں موٹروے لنک کوہاٹ براستہ جنڈ، پنڈی گھیب تاخوشال گڑھ (پیکیج1) کو دورویہ کرنے کے منصوبے میں آنے والے درختوں کی پیمائش اور تخمینہ لگانے اور کرول فارسٹ شاہدرہ میں شجرکاری کے لئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کی منظوری دی۔ اجلاس میں بھورے اور کالے تیتر پالنے کیلئے لائسنس فیس میں اضافے کا فیصلہ کیا اور کابینہ نے لائسنس فیس میں اضافے کے فیصلے کی منظوری دے دی۔کابینہ کے اجلاس میں پنجاب اڑیال کنزرویشن، پروٹیکشن اینڈ ٹرافی ہنٹنگ (کمیٹیز) رولز 2016 میں ترامیم اور بھورے ریچھ کو پنجاب وائلڈ لائف (پروٹیکشن، پرویزیشن، کنزرویشن اینڈ مینجمنٹ)ترمیمی ایکٹ 2007 میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں پنجاب پروٹیکشن آف ویمن اگینسٹ وائلنس ایکٹ 2016 کے سیکشن 2 (1) (a) (h) (j) میں ترامیم کی منظوری دی گئی جبکہ محکمہ ماحولیات کی جانب سے کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے کیلئے اضلاع میں اختیارات ڈپٹی کمشنرز کو دینے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں پنجاب لوکل گورنمنٹ سروس (اپوائنٹمنٹ اینڈ کنڈیشنز آف سروس) رولز 2018 میں ترامیم کا فیصلہ کیا گیا۔ پاکستان پٹرولیم ایکسپوریشن اینڈ پروڈکشن ریگولیٹری اتھارٹی کے قیام کے بارے میں سمری کے مسودے اوراوگرا آرڈیننس 2002 میں ترامیم کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں پنجاب کابینہ کے 21 ویں اور 22 ویں اجلاس کے منٹس کی توثیق کی گئی اوراجلاس میں کابینہ سٹینڈنگ کمیٹی فنانس اینڈ ڈویلپمنٹ کے 20ویں اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کی توثیق کی گئی ۔سیکرٹری خوراک نے کابینہ اجلاس کو بریفنگ کے دوران بتایا کہ اب تک 8.4 ملین میٹرک ٹن گنا کرش ہو چکا ہے اور رواں برس کاشتکاروں کو 22 ارب روپے کی ادائیگی ہو چکی ہے جبکہ گزشتہ برس گنے کے کاشتکارو ں کو 99 فیصد ادائیگی کی گئی ہیں۔ صوبائی وزراء، مشیران، معاونین خصوصی،چیف سیکرٹری او رمتعلقہ محکموں کے سیکرٹریز نے اجلاس میں شرکت کی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...