نومبر کے آخر تک صنعتی شعبے کیلئے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کر دیا جائیگا، باسط زمان

نومبر کے آخر تک صنعتی شعبے کیلئے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کر دیا جائیگا، باسط زمان

  

اسلام آباد (این این آئی) اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی کے چیف ایگزیکٹوآفیسر باسط زمان نے کہا کہ بجلی کے بحران پر قابو پانے کیلئے کئی منصوبوں پر کام جاری ہے اور اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ اس سال نومبر کے آخر تک صنعتی شعبے کیلئے بجلی کی لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کر دیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ وفد نے چیمبر کے صدر خالد اقبال ملک کی قیادت میں ان کے دفتر میں ان سے ملاقات کی اور مقامی صنعتوں کو بجلی کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے درپیش مسائل سے انہیں آگاہ کیا۔ وفد میں گروپ چیئرمین خالد جاوید، طارق صادق، چوہدری وحیدالدین اور محمد ذکریہ اے ضیا سمیت دیگر صنعتکار شامل تھے۔باسط زمان نے کہا کہ اسلام آباد کی صنعتوں کو مزید چند ماہ بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سامنا کرنا پڑے گا تاہم نومبر کے آخر تک بجلی بحران پر قابو پا لیا جائے گا جس کے بعد صنعتی شعبے کو بلا تعطل بجلی فراہم کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں بجلی کے نقصانات دیگر علاقوں کے مقابلے میں بہت کم ہیں جو سنگل ڈیجٹ میں ہیں جبکہ شہری علاقوں میں بجلی چوری نہ ہونے کے برابر ہے ۔ انہوں نے موقع پر ہی اپنے عملے کو صنعتی علاقوں کے فیڈرز کی مینٹیننس کو مزید بہتر کرنے کی ہدایا ت جاری کیں ۔ انہوں نے کہا کہ جو پراسسنگ انڈسٹری لوڈشیڈنگ سے زیادہ متاثر ہو رہی ہے چیمبر ان کے بارے میں تحریری طور پر آگاہ کرے تا کہ ایسی صنعتوں کو بجلی کی لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ کرنے کی کوشش کی جائے۔انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ صنعتی شعبے کیلئے موجودہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ تبدیل کرنے کیلئے چیمبر کی تجویز پر سنجیدگی سے غور کیا جائیگا۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر خالد اقبال ملک نے اپنے خطاب میں کہا حکومت نے یقین دہانی کرائی تھی کہ صنعتی شعبے کو بلا تعطل بجلی فراہم کی جائے گی ۔

لیکن اسلام آباد میں اب بھی صنعتوں کیلئے روزانہ شام 6بجے سے رات 10بجے تک چار گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے جس سے صنعتی شعبے کی پیداوار بہت متاثر ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صنعتوں کیلئے بجلی کی لوڈشیڈنگ کا موجودہ شیڈول تبدیل کر کے شام 7بجے سے رات 11بجے تک کیا جائے تا کہ ان کی پیداوار زیادہ متاثر نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ خاص طور پر پراسسنگ انڈسٹری کو لوڈشیڈنگ سے بہت نقصان پہنچ رہا ہے کیونکہ جب بجلی بند ہوتی ہے تو پراسسنگ میں موجود میٹریل ضائع ہو جاتا ہے۔ لہذا انہوں نے مطالبہ کیا کہ آئیسکو پراسسنگ انڈسٹری کو لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ کرے تا کہ ایسی صنعتوں کو بھاری نقصان سے بچایا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ غیر علانیہ لوڈشیڈنگ سے بھی صنعتوں کونقصان ہوتا لہذا آئیکسو غیر علانیہ لوڈشیڈنگ کرنے سے گریز کرے اور جب بجلی بند کرنی ہو تو پہلے متعلقہ صنعتوں کو مطلع کیا جائے۔انہو ں نے کہا کہ صنعتی علاقوں میں میٹر ریڈنگ بھی مختلف تاریخوں میں لی جاتی ہے جس سے صنعتوں کیلئے مسائل پیدا ہوتے ہیں لہذا آئیسکو میٹر ریڈنگ لینے کیلئے ہر ماہ ایک خاص تاریخ طے کرے ۔خالد جاوید، طارق صادق، چوہدری وحیدالدین اور محمد ذکریہ سمیت دیگر صنعتکاروں نے بھی بجلی کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے صنعتوں کو ہونے والے نقصانات سے آئیکسو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کو آگاہ کیا اور صنعتوں کیلئے لوڈ شیڈنگ کو کم سے کم کرنے کا مطالبہ کیا۔

مزید :

کامرس -