فروٹ جوسز کے نام پر زہر کی فروخت پنجاب فوڈ اتھارٹی نے قصور میں مضرصحت جوس بنانے والی فیکٹری سیل کر دی

فروٹ جوسز کے نام پر زہر کی فروخت پنجاب فوڈ اتھارٹی نے قصور میں مضرصحت جوس ...

  

لاہور (کامرس رپورٹر) پنجاب فوڈ اتھارٹی نے فروٹ جوسز کے نام پر زہر کی فروخت کا دھندہ بے نقاب کر دیا۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی نے قصور میں مضر صحت جوس بنانے والی فیکٹری سیل کر دی۔اول فریش جوس نامی فیکٹری بغیر فروٹ استعمال کیے انار، لیچی اور دیگر جوس بنا رہی تھی۔ اے ڈی جی آپریشنز رافیعہ حیدر نے بتایا کہ فیکٹری سے 34 ہزار لیٹر تیار لیچی، انار اور اورنج جوس برآمد کیا گیا جبکہ 45 ہزار لیٹر کا خام مال برآمدکیا گیا۔ فروٹ پلپ کا ایک بھی پیکٹ فیکٹری سے برآمد نہ ہوا۔جوس کی تیاری میں محض کیمیکلز اور ایسنس اور ٹیکسٹائل کلر کا استعمال کیا جا رہا تھا۔علاوہ ازیں میڈیکل ریکارڈ کے مطابق فیکٹری میں کام کرنے والے کئی ملازمین ہیپاٹائٹس کے شکار بھی پائے گئے۔مزید کاروائیاں کرتے ہوئے درواغہ والا مین جی ٹی روڈ پرایل ایف سی پرچھاپے کے دوران فوڈ لائسنس اور ملازمین کے سرٹیفیکٹ موجود نہ ہونے، ایکسپائرڈ بنز کے استعمال، کچن ایریا میں حشرات اور فیول کی بدبو کے پائے جانے اورگندی جگہ پر اشیاء خوردونوش کو بغیر ڈھانپے رکھنے پر احاطے کو سیل کر دیا گیا۔غالب روڈ گلبرگ پر دی عربن کیفے یوگلیشیز پر چھاپے کے دوران گوشت اور خشک اشیا ء خوردونوش کو ایک ہی جگہ پر محفوظ کرنے،حشرات کے خاتمے کا نامناسب انتظام،چائے کے لئے ایکسپائرڈ رنگوں اور مصنوعی ذائقوں کے استعمال پر 1لاکھ کا جرمانہ عائد کیا گیا۔ٹاؤن شپ میں واقع المکہ مِلک شاپ؛رحمان پورہ میں غوثیہ مِلک شاپ؛سندہ میں پاکستان چکن سیل سنٹر ؛منصورہ بازار میں ڈوسے بیکرزپر اور متعدد چکن سیل سنڑز کو معائنہ کے دوران حشرات کے نامناسب انتظام پر 75 ہزار کے جرمانے عائد کیے گئے۔

فیکٹری سیل

مزید :

علاقائی -