پنجاب‘ خیبرپختونخوا میں موسلا دھار بارش‘بجلی کا ترسیلی نظام درہم برہم

پنجاب‘ خیبرپختونخوا میں موسلا دھار بارش‘بجلی کا ترسیلی نظام درہم برہم

لاہور (کامرس رپورٹر) صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے کئی علاقوں میں ہونی والی بارش نے بجلی کے ترسیلی نظام کو درہم برہم کرکے رکھ دیا۔ درجنوں گرڈز بند ہو گئے جبکہ سینکڑوں فیڈرز ٹرپ کرکے جس سے بڑا علاقے بجلی کی فراہمی سے محروم ہو گیا ۔ ملک کے بیشتر علاقوں میں شدید حبس کے باعث گزشتہ روز بھی بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ رہا اور شارٹ فال سات ہزار میگاواٹ کے قریب رہا جس کے باعث چودہ گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی۔صوبائی دارالحکومت میں شام کے وقت تیز ہواؤں کے ساتھ بارش ہوئی جس سے لیسکو کا ترسیلی نظام متاثر ہوا لیسکو کے چار گرڈز بند ہو گئے جبکہ سو سے زائد فیڈرز ٹرپ کر گئے۔ لیسکوکے مطابق این ڈی ٹی سی کی ٹرپنگ کے باعث فیڈرز بند ہوئے ہیں۔ بارش رکنے کے بعد بحالی کا کام فوری طور پر شروع کیا گیا جو رات گئے تک مکمل کر لیا گیا۔ پنجاب کی دیگر ڈسکوز میں بھی ایسی ہی صورت حال رہی۔ دوسری جانب لیسکو کے ترجمان کے مطابق لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی (لیسکو)اپنے صارفین کی سہولت اور بجلی کے ترسیلی نظام میں بہتری کے لئے ہمہ وقت کوشاں ہے اور ا س ضمن میں بھائی پھیرو سے نکلنے والے 132Kvبوچیکی گرڈ ،66kvملک پور گرڈ اور علی جج گرڈ کے مابین پرانی ٹرانسمیشن لائن اتار کر نئی ٹرانسمیشن لائن ڈالنے کا کام شروع کر دیا گیا ہے۔لیسکو کے ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق دریا ئے راوی سے گزرنے والی پرانی ٹرانسمیشن لائن کو کسی بھی ممکنہ سیلاب کی آمد سے قبل تبدیل کرنے کے لئے گزشتہ روز سے کام کا آغاز کیا گیا ہے جبکہ 9جولائی تک کام مکمل کر لیا جائے گا۔ترجمان کے مطابق ٹرانسمیشن لائن کی تبدیلی کی وجہ سے مذکورہ تینوں گرڈوں کو بند کر کے ان سے ملحقہ علاقوں کو فیسکو کے ذریعے متبادل بجلی فراہم کی جائے گی۔ تاہم اس دوران لوڈ ذیادہ ہونے کے باعث ان علاقوں میں 10سے 12گھنٹوں کی لوڈ مینجمنٹ کی جائے گی۔

مزید : کراچی صفحہ اول