علماء نے ہمیشہ امت کی رہنمائی کا فریضہ ادا کیا،علماء کرام

علماء نے ہمیشہ امت کی رہنمائی کا فریضہ ادا کیا،علماء کرام

  

حسن ابدال(تحصیل رپورٹر)علمائے امت کی ساعی ہمیشہ دین حق کی سر بلندی کے لیے رہی ہے۔علماء نے ہمیشہ امت کی رھنمائی کا فریضہ ادا کیا ہے۔حضرت علامہ غلام جان کی رحلت سے ہم ایک نامور عالم دین سے محروم ہو گئے ہیں۔وہ تحریک پاکستان کے ایک سرگرم رکن اور متحرک عالم دین کی حیثیت سے ساری زندگی سرگرم عمل رہے۔ان خیالات کا اظہار دارالعلوم فیض القرآن حسن ابدال میں ایک بڑے تعزیتی ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علمائے کرام نے کیا۔ علامہ وقار احمد ہزاروی نے اپنے خطاب میں حضرت علامہ مولانا غلام جان تنولی کوزبردست خراج تحسین پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ علامہ تناول میں مسلک حق اہلسنت کی ترویح و اشاعت میں ان کا کردار کبھی فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے دینی تعلیمات لوگوں تک پہنچانے میں اپنی پوری عمر صرف کر دی۔ مولانا فیض الامین نے کہا کہ حضرت علامہ غلام جان تنولی ایک متبحر عالم دین تھے۔وہ اپنی ذات میں انجمن تھے۔آج ان کے فیوض و برکات پورے علاقے میں دیکھے جا سکتے ہیں۔حضرت علامہ غلام جان تنولی کے فیوض و برکات کے امین علامی مفتی شیخ الحدیث حضرت شہزاد گل نے کہا کہ ابتدائی درس نظامی کی کتابیں انہوں نے اپنے والد گرامی سے پڑھیں وہ نشانی اسلاف تھے۔ان کا امتیازی وصف یہ تھا کہ انہیں شہزادہ کونین حضرت سیدنا امام حسینؓ اور اہل بیت سے بے حد محبت تھی۔تقریب میں شرکت کرنے والے علمائے کرام میں جناب پیر سید نذر حسین شاہ۔قاری عبدالرحمن۔مرکزی سیرت کمیٹی سے صدر حاجی چنگیز خان۔علامہ مفتی محمد جہانگیر۔علامہ زاہد صدیقی۔آصف علی ہزاروی۔فدا الرحمن ثانوی۔جناب علامہ اویس ہزاروی۔مولانا محمد عالم غفوری۔صدر مرکزی انجمن تاجراں چوہدری جمشید اختر کے علاوہ درجنوں علمائے کرام ۔حجاظ اور قراء شریک محفل تھے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -