”میتھی سونے سے مہنگی“ طب نبویﷺ نے اسکے فوائد آشکار کردئیے

”میتھی سونے سے مہنگی“ طب نبویﷺ نے اسکے فوائد آشکار کردئیے
”میتھی سونے سے مہنگی“ طب نبویﷺ نے اسکے فوائد آشکار کردئیے

  

لاہور(حکیم محمد عثمان)قصور کی میتھی کا نام تو سنا ہوگا؟ یقنیاً اس خطہ کی زمین میں ایسی زرخیزی موجود ہے جس نے میتھی کے جواہر کی مکمل طورپر افزائش کی ہے اور یوں قصوری میتھی کو دنیا بھر میں پذیرائی حاصل ہوچکی ہے لیکن کیا آپ نے کبھی عرب میں پیدا ہونے والی میتھی کھائی ہے جس پر اللہ کے رسولﷺ نے شفا کی مہر ثبت فرمائی ہے اور اسکی شان افادیت میں کئی احادیث مرقوم ہوئی ہیں ۔بعض اطباء کہتے ہیں کہ اگر لوگ میتھی کے فوائد سے آشنا ہو جائیں تو سونے کے دام کے برابر اس کی قیمت دے کر اس کو خریدنے لگیں گے۔اہل عرب اسکو اسی بنا پر شوق سے کھاتے تھے۔

میتھی کو عربی میں حلبة کہتے ہیں۔ روایت ہے کہ ایک بار آپﷺ حضرت سعد بن ابی وقاص ؓکی عیادت کے لئے تشریف لے گئے تو فرمایا کہ کسی ماہر طبیب کو بلا لائو  چنانچہ حارث بن کلدہ کو بلایا گیا۔ اس نے ان کو دیکھ کر کہا کہ کوئی خطرے کی بات نہیں ہے ان کے نسخہ میں میتھی کوتازہ عجوہ کھجور کے ساتھ جوش دیا جائے اور اسی کا حریرہ ان کو دیا جائے ۔چنانچہ یہی کیا گیا تو یہ شفایاب ہوگئے۔حضرت قاسم بن عبدالرحمٰنؓ سے روایت کی جاتی ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا کہ میتھی کے ذریعہ شفاءحاصل کرو۔

میتھی کھانوں کی رونق ہے لین طب میں اسکو کئی امراض میں استعمال کیا جاتا ہے۔اسکا جوشاندہ‘حلق‘سینہ اور شکم کو نرم کرتا ہے ۔کھانسی‘خشونت اور دمہ تنگی تنفس کو دور کرتا ، قوت باہ بڑھاتا ہے‘ریاح‘بلغم‘بواسیر کے لئے نہایت مجرب دوا ہے۔ آنتوں میں رکے ہوئے فضلہ کو نیچے لاتا ہے اور سینے کے لیس دار بلغم کو تحلیل کرکے باہر نکالتا ہے۔ پیٹ کے پھوڑوں اور پھیپھڑے کی بیماریوں میں نافع ہے ۔ایسی خواتین جن کے دودھ کم اترتا ہو انہیں میتھی کھلائی جائے تو ان میں وافر دودھ پیدا ہوتا ہے۔میتھی میں ایسے کیمیائی اجزا موجود ہیں تحریک پیدا کرتے ہیں لہذا سست و کاہل حضرات کے لئے یہ کسی نعمت سے کم نہیں۔

میتھی کو سبزی کے طور پر مختلف سبزیوں کے ساتھ پکایا جاتا ہے جبکہ اسکا پوڈرکھانوں کا ذائقہ بڑھانے میں استعمال ہوتا ہے۔ میتھی کے بیجوں کو اچاراورکھانوں میں استعمال کیا جاتا ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -