بھارتی فورسز کے ہاتھوں گرفتار نوجوانوں کی رہائی کے حق میں کشمیری خواتین کا مظاہرہ

بھارتی فورسز کے ہاتھوں گرفتار نوجوانوں کی رہائی کے حق میں کشمیری خواتین کا ...
بھارتی فورسز کے ہاتھوں گرفتار نوجوانوں کی رہائی کے حق میں کشمیری خواتین کا مظاہرہ

  

سری نگر(کے پی آئی) بھارتی فورسز کے ہاتھوں گرفتار نوجوانوں کی رہائی کے حق میں کشمیری خواتین نے سری نگر میں احتجاجی دھرنا دیاخواتین نے بتایا کہ درجنوں نوجوان پچھلے پندر دنوں سے زخمی حالت میں پولیس حراست میں ہے اور منا سب علاج ومعالجہ نہ ملنے کے باعث انکی زندگی کوخطرہ لاحق ہو سکتا ہے سکہ ڈافر سرینگر سے تعلق رکھنے والی خواتین سر ینگر کی پریس کا لونی میں نمودار ہو ئیں اور انہوں نے مقامی نوجوان کی گرفتا ر ی کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرتے ہو ئے کہا کہ 30سا لہ مبشر احمد بٹ ولد نذ یراحمد بٹ ساکن سیکہ ڈافر صفا کدل شب قدر کے موقعہ پر شب خوانی کیلئے جامع مسجد گیا جب آ ٹھ رکعت تروایح ادا کرنے کے بعد وہ مسجد سے با ہر آ یا تو اسی وقت وہاں ایک ہجوم جمع تھا۔احتجاجی خواتین کا کہنا تھا کہ اس صورتحال کی وجہ سے وہاں افرا تفر ی کا عالم تھا اور اسی اثنا ء میں ایک گولی چھو تے ہو ئی اسکے پیر میں پیوست ہو ئی اور زخمی ہونے کے بعد وہ بے ہوش ہو گئے بعد میں اسکے دوستوں نے اسے بے ہوشی کی حالت میں سکمز پہنچایا۔رات بھر علاج ومعالجہ کے بعد اسے اگلی صبح اسپتال سے گھر رخصت کیا گیا۔ احتجاج میں شامل مبشر احمد بٹ کی بھابی نے کہا کہ اسی روز صفا کدل پولیس کی ایک ٹیم ہماری گھر پہنچی اور انہوں نے کہا کہ ہمیں پولیس آ فیسر کی ہلاکت کے سلسلے میں مبشر سے تھوڑ ی بہت پوچھ تاچھ کرنی ہے لہذا اسکو پولیس تھانہ بھیجنا۔ انہوں نے کہا کہ مقامی محلہ اور بازار کمیٹی کے ہمرا ہ اسے عرفہ کے روز صفا کدل پولیس کے حوالے کیا گیا جس کے بعد اسے نوہٹہ پولیس تھانہ میں زیر حراست رکھا گیاہے۔ انہوں نے کہا کہ مبشر کے جس پیر میں گولی لگی تھی وہ علاج نہ ہونے کے سبب نا کار ہ بن رہا ہے اگر اسے بروقت علاج معالجہ نہیں کیا گیا تو وہ عمر بھر کیلئے ایک پیر کھو سکتاہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر چہ گھروالوں نے پو لیس کے زیر حراست میں ہی اس کو ایک پرئیویٹ ڈاکٹر کے پا س لیجانے کی پیش کش کی تھی تاہم پولیس اسکی اجازت بھی نہیں دے رہی ہے اور نہ ہی خود اسکے علاج ومعالجہ کیلئے اقدا مات اٹھا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مناسب علاج ومعالجہ نہ ہونے کی وجہ سے مبشرزند گی کو خطر ہ لاحق ہو سکتا ہیمبشر احمد بٹ کی بھابی نے مزید کہا کہ وہ بے قصور ہے اور اس رات وہ محض شب خوانی کے سلسلے میں جامع مسجد گیا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -