ریمنڈ ڈیوس واقعہ کے بعد سی آئی اے کے 100 کنٹریکٹرز و رابطہ کاروں کا نیٹ ورک بے نقاب کر کے توڑدیا گیا

ریمنڈ ڈیوس واقعہ کے بعد سی آئی اے کے 100 کنٹریکٹرز و رابطہ کاروں کا نیٹ ورک بے ...
ریمنڈ ڈیوس واقعہ کے بعد سی آئی اے کے 100 کنٹریکٹرز و رابطہ کاروں کا نیٹ ورک بے نقاب کر کے توڑدیا گیا

  

لاہور (ویب ڈیسک) سی آئی اے ایجنٹ ریمنڈ ڈیوس کے واقعے کے بعد پاکستان کی پریمیر خفیہ ایجنسی نے ملک گیر کاﺅنٹرانٹیلی جنس آپریشن میں امریکی سیکرٹ سروس کے 100 سے زائد کنٹریکٹر اور رابطہ کار افراد کے نیٹ ورک کو ختم کیا۔ روزنامہ 92 نیوز کے مطابق پاکستان میں سی آئی اے کے سیکرٹ وار فیئر نیٹ ورک کو توڑ نے کیلئے کچھ اہم آپریشنز کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ آئی ایس آئی نے امریکی خفیہ ادارے کی پاکستان میں خفیہ کارروائیوں کو ناکام بنایا اور ریمنڈ ڈیوس کے پکڑے جانے کے بعد ملک گیر کاﺅنٹر انٹیلی جنس آپریشن میں امریکی سیکرٹ سروس کے 100 سے زائد کنٹریکٹر اور رابطہ کار افراد کے نیٹ ورک کو ختم کیا۔ ان سے جب پوچھا کہ انہوں نے یہ کارروائیاں پہلے کیوں نہ کیں تو انہوں نے جواب دیا کہ انٹیلیجنس آپریشنز پولیسنگ ایکشن نہیں ہوتے، ان آپریشنز میں بعض اوقات پورے گروپ کو پکڑنے کیلئے بڑا لمبا عرصہ درکار ہوتا ہے اور یہ بھی معلوم کرنا ہوتا ہے، ان خفیہ آپریٹوز کے اہداف کیا ہیں۔ اسی طرح ریمنڈ ڈیوس اور اس گینگ کے دوسرے ممبر ایجنسی کی سرویلنس میں تھے اور جب بھی کوئی کاﺅنٹر انٹیلی جنس ٹیم ضروری سمجھتی، ان کو پکڑسکتی تھی۔ ریمنڈ ڈیوس کے واقعے کے بعد یہ ضروری ہوگیا تھا کہ سی آئی اے کو بتایا جائے کہ اس کے نیٹ ورک کو آئی ایس آئی کسی وقت بھی غیر موثر بناسکتی ہے۔ انہی آپریشنز کے دوران سی آئی اے کے رابطہ کار مقامی اور غیرملکی افراد کے زیر استعمال 170 کے قریب پوش علاقوں کے گھروں کی بھی نشاندہی کی اور ان سے جڑے لوگوں کے خلاف کارروائی بھی کی گئی۔

سی آئی اے کنٹریکٹر اور رابطہ کار افراد اکثر سوشل ویلفیئر پروگرامز کے کور میں آپریٹ کرتے اور بعض امریکن سفارتخانے کے نان ڈپلومیٹک سٹاف کے کور میں بھی کام کرتے۔ سی آئی اے کے کنٹریکٹرز بظاہر سکیورٹی کا کام کرتے مگر اس کور میں وہ سی آئی اے کے ٹاسک سرانجام دیتے۔ سینئر سکیورٹی آفیشلز نے سی آئی اے کی مقامی نیٹ ورک بنانے کی کوشش کے حوالے سے بتایا کہ امریکی خفیہ ایجنسی نے اپنے رابطہ کار افراد اور کنٹریکٹرز کے ذریعے پنجاب کے جنوبی علاقوں کو خصوصی جبکہ دیگر صوبوں کو بھی ہدف بناتے ہوئے پرائیویٹ سکیورٹی ڈیوٹی کیلئے سابق کمانڈوز اور خفیہ اداروں کے اہلکاروں کو بھرتی کرنے کی کوشش کی لیکن آئی ایس آئی نے پلان ناکام بنادیا ۔

مزید :

لاہور -