اسلام کے صوفی فلسفہ کا پیروکار ہوں،میرے مذہبی عقائد ہی میرے کیرئیر کی تشکیل میں معاون ثابت ہوئے ہیں :بھارتی موسیقار اے آر رحمان

اسلام کے صوفی فلسفہ کا پیروکار ہوں،میرے مذہبی عقائد ہی میرے کیرئیر کی تشکیل ...
اسلام کے صوفی فلسفہ کا پیروکار ہوں،میرے مذہبی عقائد ہی میرے کیرئیر کی تشکیل میں معاون ثابت ہوئے ہیں :بھارتی موسیقار اے آر رحمان

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن)موسیقی کی دنیا میں 25 سال مکمل کرنے والے بھارت کے آسکر اور گریمی ایوارڈ یافتہ موسیقار اے آر رحمان کا کہنا ہے کہ ان کے مذہبی عقائد ہی ان کے لئے اپنی کریئر کی تشکیل میں مدد گار ثابت ہوئے ہیں،اپنی عمر کی 20 کی دہائی میں دین اسلام قبول کرنے والے انڈین موسیقار اے رحمان فی الحال لندن میں ’’کل آج اور کل‘‘نامی پروگرام کے لئے مصروف ہیں۔

انہوں نے غیر ملکی خبر رساں ادارے کو خصوصی انٹرویو میں بتایا کہ ان کے نزدیک اسلامی عقیدے کا مطلب ایسی زندگی بسر کرنا ہے جس میں سادگی اور انسانیت نوازی کو کلیدی حیثیت حاصل ہو۔مشہور بھارتی موسیقار اے آر رحمان کا کہنا تھا کہ دین اسلام ایک بحر بیکراں ہے، جس میں مختلف مسالک ہیں، جن کی تعداد 70 سے بھی زیادہ ہے، اس لئے میں اسلام کے صوفی فلسفہ کا پیروکار ہوں، جس کی بنیاد آپسی محبت پر قائم ہے، میں آج جو کچھ بھی ہوں وہ صرف اسی صوفی فلسفہ کی پیروی کرنے کی بدولت ہوں اور میرا خاندان بھی اسی کا پیروکار ہے، بلاشبہ بہت سارے (منفی) واقعات رونما ہورہے ہیں لیکن میرا خیال ہے کہ ان میں سے بیشتر سیاسی نوعیت کے ہیں۔واضح رہے کہ عوامی روایات، قوالی اور روحانیت سے عبارت صوفیت ایک غیر تشدد پسند اسلامی عقیدہ ہے جو حال و کیف کی رسوم و روایات پر مبنی اور مذہب کے باطنی (عارفانہ) پہلو کی عکاسی کرتا ہے۔ تقریبا 50 سالہ موسیقار دو آسکر ایوارڈ اور دو گریمی ایوارڈ یافتہ اے رحمان گولڈن گلوب سے بھی سرفراز کئے جاچکے ہیں، اے رحمان نے 160 فلموں کے لئے موسیقی تخلیق کی ہے، جن میں آسکر ایوارڈ یافتہ فلم ’’ سلم ڈاگ ملینئر‘‘اور بالی ووڈ کی فلم ’’ لگان ‘‘ اور ’’ تال‘‘ بھی شامل ہیں۔

مزید :

تفریح -