گگومنڈی ساہوکا ظلم کی انتہا ‘ بابا شیردربار پر ذہنی معذور افراد کا زنجیروں سے باندھ کر علاج کیے جانے کا انکشاف

گگومنڈی ساہوکا ظلم کی انتہا ‘ بابا شیردربار پر ذہنی معذور افراد کا زنجیروں ...
گگومنڈی ساہوکا ظلم کی انتہا ‘ بابا شیردربار پر ذہنی معذور افراد کا زنجیروں سے باندھ کر علاج کیے جانے کا انکشاف

  

وہاڑی  (ویب ڈیسک) بابا حاجی شیر دربار پر ذہنی معذور افراد کو زنجیروں سے باندھنے کا سلسلہ عرصہ دراز سے جاری  ہونے کا انکشاف ہوا ہے ۔ ضعیف العقید ہ لوگ سمجھتے ہیں کہ ایسا کرنے سے ذہنی معذور تندرست ہو جاتے ہیں اور ان کی زنجیریں خود بخود کھل جاتی ہیں۔ حیران کن بات ہے کہ دربار کے نزدیک ہی ایک رفاحی ادارے نے نفسیاتی مریضوں کیلئے ہسپتال بنایا ہوا ہے لیکن سادہ لوح لوگ ایک مریضوں کو ہسپتال لے جانے کی بجائے دربار پر زنجیروں سے باندھ کر مطمئن ہو جاتے ہیں کہ بابا جی ہی انہیں تندرست کرے گا۔

روزنامہ خبریں کے مطابق گگومنڈی سے 30 کلومیٹر کی مسافت پر دربار بابا حاجی شیردیوان چاولی مشائخ پر ہر طرف بندھے ذہنی معذور افراد کو دیکھ کر کوئی بھی دنگ رہ جاتا ہے کہ اس سائنسی دور میں بھی سادہ لوح لوگ پتھر کے زمانہ میں رہ رہے ہیں۔ دربار بابا حاجی شیردیوان کے درجن بھر سے زائد گدی نشین ہیں اور ہر ایک نے اپنا علیحدہ آستانہ بنایا ہوا ہے جہاں ہر ایک کے آستانہ پر ذہنی معذور افراد کو زنجیروں سے باندھ کر رکھا گیا ہے ۔ تصویر میں نظر آنے والے مریض صرف ایک گدی نشین کے ڈیرہ پر بندھے ہوئے افراد کی ہے جبکہ دیگر آستانوں پر رسائی ممکن نہیں ہوسکی۔ راسخ لعقیدہ لوگوں کا ماننا ہے کہ دربار پر زنجیروں سے باندھنے سے ان کے مریض خود بخود تندرست ہو جاتے ہیں جس کے بعد ان کی زنجیریں خودبخود کھل جاتی ہیں۔

حیران کن بات یہ ہے کہ سب کچھ حکومت کی ناک کے نیچے ہو رہا ہے کیونکہ دربار محکمہ اوقاف کی زیر نگرانی ہونے کی وجہ سے دربار پر محکمہ اوقاف کے افسران مستقل قیام پذیر ہیں جبکہ وزیراعلیٰ ، وفاقی و صوبائی منسٹرز کے علاوہ پولیس سمیت دیگر محکموں کے اعلیٰ افسر اکثر دربار پرآتے رہتے ہیں لیکن زنجیروں سے بندھے ہوئے ان انسانوں کی زنجیریں کھلوانے کیلئے اب تک کسی نے کوئی اقدام نہیں کیا ۔ پتہ چلا ہے کہ پاکستان بھر سے لوگ اپنے ذہنی مریضوں کو دربار پر باندھنے کیلئے آتے ہیں جن میں سے اکثر اپنے پیاروں کو باندھ کر بے یارومددگار چھوڑ کر چلے جاتے ہیں اور کئی ایک تو واپس آکر ان کی خبر تک نہیں لیتے۔ پتہ چلا کہ دربار پر عام دنوں میں ہر ہفتہ دو لاکھ اور عرس کے موقع پر کروڑوں روپے چند ہ کی مد میں رقم اکٹھی ہوتی ہے لیکن گندی ور بدبو دار جگہ پر بندھے ان افراد کو دیکھ کر حیرت دنگ رہ جاتی ہے ۔

مزید :

وہاڑی -