دہشت گردوں کا سہولت کار آج بھی وفاق کابینہ میں موجود،سلیکٹڈ وزیراعظم امپائر کی اُنگلی پر ناچتا ہے،بلاول بھٹو

دہشت گردوں کا سہولت کار آج بھی وفاق کابینہ میں موجود،سلیکٹڈ وزیراعظم امپائر ...

ڈیرہ اسماعیل خان، اسلام آباد (نمائندہ پاکستان، سٹاف رپورٹر،نیوزایجنسیاں)چیئر مین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہاہے میں اس کٹھ پتلی حکومت کا مقابلہ کرنے کیلئے نکلا ہوں، ذوالفقار علی بھٹو نے لوگوں کو جینے کا شعور دیا،میں عوام کے معاشی حقوق کاتحفظ کرنے کیلئے نکلا ہوں، گزشتہ روز ڈیرہ اسماعیل خان میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا ہم سرزمین پاکستان کا دفاع کرتے رہے گے، کے پی میں جتنے منصوبے لگے ان میں سے زیادہ تر ذوالفقار علی بھٹو شہید اور پیپلز پارٹی نے لگائے، شہید بینظیر بھٹو نے ایک آمر کا مقابلہ کیا، ذوالفقار علی بھٹو نے اصلاحات کیں اور غریبوں کوروزگار دیا، محترمہ بینظیر بھٹو شہیدنے ایف سی آر کیخلاف آواز اٹھائی، ان کا کہنا تھا ہمارا ایک شہادت کا رشتہ بھی ہے، کوئی آپ کے درد کونہیں سمجھ سکتا جس طریقے سے میں سمجھ سکتا ہوں کیونکہ میں بھی اسی آگ کے دریا سے گزرا ہوں، میں شہیدوں کا مشن پورا کرنے کیلئے اس سرزمین پر کھڑا ہوں، ہم یہ پوچھنے میں حق بجانب ہیں کہ ہمارے پیاروں کوکیوں چھینا گیا؟ ان کے قاتل کون ہیں؟ ہم کس کے ہاتھوں پر اپنا لہوتلاش کریں۔ مجھے شہید محترمہ بینظیر بھٹو کے شہاد ت کا انصاف کب ملے گا؟ یہ سوال پوچھنا ہمارا حق ہے، کیوں دنیا ہمارابیانیہ نہیں سن رہی اور کیوں ہمارا موقف تسلیم نہیں کیا جارہا؟جومقدس لہو اس دھرتی کیلئے بہاہے، یہ اس کیساتھ مذاق نہیں تو کیا، یہ سوال پوچھنا ہمارا حق ہے،انہوں نے ایک بار پھر الزام عائد کیا کہ دہشت گردوں کا سہولت کار آج وفاقی کابینہ میں بیٹھا ہے۔ان کا کہنا تھا کیا ہمارا جرم دہشتگردی کے خلاف پارلیمان کو اکٹھا کرنا ہے؟ کیا ہمارا جرم یہ ہے کہ زرداری پہلی بار ایف سی آر میں ترمیم لے کر آئے؟ کیا ہمارا جرم یہ ہے 18 ویں ترمیم اور این ایف سی ایوارڈ کے ذریعے صوبوں کو حقوق دیئے؟چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا عمران خان نے حکومت حاصل کرنے کیلئے کیا کیا وعدے کیے اور عوام کو سبز باغ دکھائے، کیا 50 لاکھ گھر اور ایک کروڑ نوکریاں لوگوں کو مل گئی ہیں؟ عمران خان کہتے تھے اوورسیز پاکستانی ڈالرز کی بارش کر دیں گے، عمران خان کے تمام نعرے کھوکھلے اور جھوٹ نکلے۔ ملک میں مہنگائی کا عذاب ہے، صبح میں ڈالر، گیس و بجلی، سبزیوں کی قیمت کچھ اور شام میں کچھ اور ہوتی ہیں، یہ کیسا نیا پاکستان ہے جس میں غر یب کی زندگی مشکل، تاجر کا کاروبار تباہ اور کسان بدحال ہیں۔ عمران خان نے ملک کو آئی ایم ایف کے ہاتھوں گروی رکھ دیا ہے، دھاندلی زدہ، پی ٹی آئی ایم ایف کے بجٹ میں امیروں کیلئے ریلیف اور غریبوں کیلئے تکلیف ہے، دھاندلی بجٹ سے عوام کا خون چوسا جا رہا ہے۔ آج ملک میں سلیکٹڈ حکومت لا کر بٹھا دی گئی ہے، ہر طبقہ چلا رہا ہے لیکن اس ظالم عمران کو فرق نہیں پڑتا، یہ سلیکٹڈ وزیراعظم ہے جو امپائر کی انگلی پر ناچتا ہے، اسے سمجھ نہیں آ رہا کرکٹ میں امپائر کی انگلی چلتی ہے، جمہوریت میں عوام کی مرضی چلتی ہے۔ اگر شفاف انتخابات نہیں ہو سکتے تو یہ کونسی آزادی و جمہوریت ہے، عمران خان نے تو صرف 4 حلقوں کا کہا تھا، 2018 کے الیکشن میں تو پورے ملک سے فارم 45 غا ئب تھے۔ قبائلی عوام نے آمروں سے مقابلہ کیا، دہشتگردوں سے مقابلہ کیا، اب دھاندلی اور کٹھ پتلی کا مقابلہ کریں گے۔انہوں نے سوال کیا کیا یہ وہ پاکستان ہے جس کا وعدہ قائد اعظم ؒنے کیا تھا؟ نہیں بالکل نہیں، ہم سب کو نکلنا پڑے گا اور اس کٹھ پتلی حکومت کو بے نقاب کرنے کیلئے لڑنا ہو گا۔ آج میں اس دھرتی پر کھڑا ہوں جس کوکبھی آمریت اورکبھی دہشتگردی نے نشانہ بنایا، قبائلی علاقوں کو پیپلز پارٹی نے ترقی دی، پیپلزپارٹی نے ٹانک تک سوئی گیس کی فراہمی یقینی بنائی۔قبل ازیں بلاول بھٹو نے لا ڑ کا نہ میں پی آئی اے کے کنگ آفس کوختم کرنے کی مذ مت کرتے ہوئے کہا پانچ دہائیوں سے لاڑکانہ کی قیادت کو انتقام کا نشانہ بنانے کے بعد بھی حکمرانوں کا کلیجہ ٹھنڈا نہیں ہوا، سلیکٹڈ وزیراعظم امتیازی پالیسیوں سے احساس محرومی کے نئے بیج بونا بند کریں، سلیکٹڈ حکومت نے لاڑکانہ کی عوام سے امتیازی برتاوَ کی انتہا کر د ی ہے، لا ڑ کانہ میں پی آئی اے کی بکنگ آفس ختم کرنا عوام کو پیپلز پارٹی سے محبت کی سزا ہے۔ ایک طرف کٹھ پتلی حکمران ملک میں سیاحت کو فروغ کیلئے اقدامات کا ڈھنڈورا پِیٹ رہے ہیں، دوسری جانب دنیا کے ایک قدیم تاریخی ور ثہ مو ہنجو دڑو تک سیاحوں کو پہنچنے کی سہولیات ختم کی جا رہی ہیں۔بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا قوم ابھی تک آمروں اور ان کی کٹھ پتلیوں کے بو ئے ہوئے عذابوں کو بھگت رہی ہے۔انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا پاکستان پر رحم کریں ملک کے ہر کونے کے عوام کو ایک آنکھ سے دیکھنے کی ضرو ر ت ہے، لاڑکانہ کے عوام کو 40 سال سے حاصل سہولت ختم نہ کی جائے، پی آئی اے بکنگ آ فس ختم کرنے کا فیصلہ واپس لے۔

بلاول بھٹو

مزید : صفحہ اول


loading...