طورخم میں کسٹم حکام اور کلئیرنس ایجنٹس کے درمیان مذاکرات ناکام، ہڑتال جاری

 طورخم میں کسٹم حکام اور کلئیرنس ایجنٹس کے درمیان مذاکرات ناکام، ہڑتال جاری

خیبر(صباح نیوز)پاک افغان بارڈر طورخم میں کسٹم کلئیرنس ایجنٹس کا اپنے مطالبات کے حق میں ہڑتال دوسرے روز بھی جاری رہی،پاک افغان بارڈر کے دونوں اطراف ہزاروں مال بردار گاڑیاں پھنس گئیں، کسٹم حکام اور کلئیرنس ایجنٹس کے درمیان مذاکرات ناکام ہو گئے، افغانستان کو ہر قسم کی سپلائی معطل کر دی گئی۔ تفصیلات کے مطابق پاک افغان بارڈر طورخم میں کسٹم کلئیرنس ایجنٹس کا اپنے  مطالبات کے حق میں دوسرے روز بھی ہڑتال جاری ہے۔جس کی وجہ سے بارڈر کے دونوں اطراف گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئی ہے۔کسٹم کلئیرنس ایجنٹس نے کسٹم حکام کو پندرہ مطالبات پیش کئے ہے۔جس میں سب سے پہلے نیٹ بلا تعطل بحال رکھنے،فروٹس اور سبزیوں کی کلئیرنس کے لئے وقت بڑھانے،ایمپورٹ رمینل ایکسپورٹ گیٹ اوٹ کی اجازت NLCکو نہ دینے،ایمپورٹ اور ایکسپورٹ کی valueکم کرنے،ایگزامینیشن ایک طریقے سے کرنے،مکس ائیٹم میں ڈکلیریشن ریشو پر کرنے،وی باک کا ٹوکن 500کی بجائے 250میں بحال کرنے کے علاوہ کئی دیگر مطالبات بھی پیش کئے۔ہڑتال کے دوسرے روز شدید گرمی میں فریش فروٹس اور سبزیاں خراب ہونے کا خدشہ ہے۔ آئے روز ہڑتالوں سے پاک افغان تجارت میں نمایاں کمی آئی ہے۔

ہڑتال جاری

مزید : صفحہ اول


loading...