بجلی کمپنیا ں صارفین سے 78ارب روپے زائد سے واجبات وصول کرنے میں ناکام رہیں ، نیپرا

بجلی کمپنیا ں صارفین سے 78ارب روپے زائد سے واجبات وصول کرنے میں ناکام رہیں ، ...

اسلام آباد (صباح نیوز)نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا)نے مختلف علاقوں میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا اعتراف کیا ہے۔ سال 2017-18 کے بارے میں جاری کردہ نیپرا رپورٹ میں کہا گیا کہ بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں لوڈ شیڈنگ کے حوالہ سے غلط ا عدادوشمار فراہم کر رہی ہیں۔ ایک سال میں پیسکو، سیپکو، ہیسکو اور کیسکو کی کارکردگی میں کوئی بہتری نہیں آسکی ۔ نیپرا کے مطابق بجلی چوری اور نقصانات سے قومی خزانہ کو ایک سال میں 45ارب روپے سے زائد کا نقصان ہوا ہے۔ کمپنیاں صارفین سے 78ارب روپے سے زائد واجبات وصول کرنے میں ناکام رہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مختلف علاقوں میں بجلی کی غیرا علانیہ لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے اور بجلی کی تقسیم کار کمپنیاںلوڈ شیڈنگ کے حوالہ سے غلط اعدادوشمار فراہم کر رہی ہیں، اس پر نیپرا نے تشویش کا اظہار کیا ہے اور بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے خلاف کارروائی بھی شروع کر دی گئی ہے اور انہیں جرمانے بھی کئے جا رہے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کراچی میں لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں کمی آئی ہے ، کراچی میں بجلی کے نقصانات 20.4فیصد کی کم ترین سطح پر آگئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق نئے کنیکشنز کی فراہمی میں لیسکو، فیسکو، گیپکو ، پیسکو اور کے الیکٹرک کی کارکردگی بہتر رہی۔ 2017-18میں مرمتی کاموں کے دوران ملازمین کے ساتھ 152خطرناک حادثات رپورٹ ہوئے۔ نیپرا رپورٹ کے مطابق اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی کے علاوہ بجلی کی دیگر تمام 10تقسیم کار کمپنیوں کی کاردکردگی نیپرا کے معیارات کے مطابق نہیں رہی۔

نیپرارپورٹ

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...