مہمند، کمالی حلیمزئی و تحصیل صافی کے مراکز صحت بند۔ عوام کو شدید مشکلات

مہمند، کمالی حلیمزئی و تحصیل صافی کے مراکز صحت بند۔ عوام کو شدید مشکلات

مہمند (نمائندہ پاکستان) مہمند، کمالی حلیمزئی و تحصیل صافی کے مراکز صحت بند۔ عوام کو شدید مشکلات کا سامنا۔ دہشت گردی کا شکار تحصیل صافی کے عوام بدحالی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ علاقے میں کوئی بنیادی سہولیات نہیں۔ ان خیالات کا اظہار ملک حاجی عظیم قنداری، خان بابا، فضل محمد خان و دیگر نے اخباری نمائندوں کو بتایا۔ انہوں نے کہا کہ علاقے میں جو مراکز صحت ہے اُن پر حکومت کی جانب سے کروڑوں روپے خرچ کئے گئے ہیں۔ مگر اُن کی کارکردگی صفر ہے۔ دہشت گردی کے بعد امن لوٹنے کے باﺅجود بھی سرکاری سکولوں اور ہسپتالوں کی حالت ناگفتہ بہہ ہے۔ عوام کو بجلی کے ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کا بھی سامنا ہے۔ 24 گھنٹوں میں 3 گھنٹے بجلی بھی سپلائی نہیں ہو رہی ہے۔ پورا علاقہ بدستور ویران دیکھائی دیتا ہے۔ مراکز صحت پر حکومت کا ماہانہ کروڑوں روپے خرچ ہوتے ہیں مگر اُس میں تعینات عملہ غائب رہتا ہے۔ اور تنخواہیں گھروں پر وصول کر رہے ہیں۔ جبکہ معمولی سا مریض ، زخمی یا ڈلیوری کو بھی ہم غلنئی اور پھر غلنئی سے پشاور لے جاتے ہیں۔ جو کہ ان میں سے اکثر راستے ہی میں دم توڑ جاتے ہیں۔ حکمرانوں نے ہمارے ان مشکلات کی طرف کبھی بھی توجہ نہیں دی ہے۔ زمین بوس گھروں کی دوبارہ آباد کاری کا ابھی تک سروے نہیں کیا گیا ہے۔ اعلیٰ حکام کو چاہئے کہ وہ ضلع مہمند کی تقدیر کو بدلنے کیلئے ٹھوس اقدامات اُٹھائیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...