شانگلہ میں بجلی کی آنکھ مچولی، غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے عوام مشتعل

شانگلہ میں بجلی کی آنکھ مچولی، غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے عوام مشتعل

الپوری (ڈسٹرکٹ رپورٹرشانگلہ ضلع بھر میں بجلی کی انکھ مچولی جاری، بشام میں بجلی کی غیر اعلانیہ ناروا لوڈ شیڈنگ کے خلاف عوام سڑکوں پر نکل آئے۔زبردست احتجاجی مظاہرہ۔شاہراہ قراقرم تین گھنٹے کیلئے بند۔بشام شہر میں شدید گرمی کے باجودناروا لوڈ شیڈنگ سراسرظلم ہے۔بجلی بندش نے عوام کے ناک میں دم کردیا ہے، چھوٹے کاروبار شدید متاثر،ہسپتالوں اور سرکاری دفاتر میں بھی کام ٹھپ ہوکر رہ گیا، مریضوں اور عوام کو شدید مشکلات کا سامنا، شانگلہ کے بشام اور مضافاتی علاقوں میں پانی کی قلت شروع ہوگئی ہے، شا نگلہ ضلع بھر میں بجلی کی بندش جاری ہے جو کہ ناقابل برداشت ہوچکا ہے، عوامی حلقوں کا احتجاج کا امکان۔شانگلہ میں فیکٹری، کارخانہ، انڈسٹری کے نہ ہونے کے باوجود پندرہ، پندرہ گھنٹے لوڈ شیڈنگ عوام کے ساتھ امتیازی سلوک ہے، شانگلہ کے ایک حصے میں موسم موزون ہوتا ہے تو دوسری حصے میں جس میں بشام، چکیسر، سین کھڑیئ کے دیگر علاقے شامل ہیں میں شدید گرمی کی لہر اور بجلی بندش نے عوام کو مشکلات میں ڈال دیا ہے۔ دیدل کماچ، نصرت خیل، مارتونگ اور دیگر گرم علاقوں میں بجلی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ اٹھارہ گھنٹے تک ہے۔ ادھر کوٹکی گریڈ سٹیشن کے فیڈرز پر گنجان آباد علاقوں کو لائن دینے کے بعد یہ فیڈر گنجائش سے زیادہ لوڈ ہونے سے ایک طرف لوڈ شیڈنگ تو دوسری طرف ایک گھنٹے بجلی میں ہر پانچ اور دس منٹ بعد مین لائن ٹرف کرجاتی ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، الپوری اور مضافاتی علاقوں میں بجلی کی انکھ مچولی نے عوام کے ناک میں دم کردیا ہے جبکہ باقی ضلع میں گرمی کے لہر نے عوام کو اپنے لپیٹ میں لے لیا ہے، بجلی کی غیر اعلانیہ اور ناروا لوڈ شیڈنگ کے خلاف عوامی حلقوں نے احتجاج کی دھمکی دے دی ہے۔بشام احتجاجی مظاہرے میں سینکڑوں افراد نے شرکت کی احتجاجی طور پر بازار میں شٹرڈاؤن رہا۔مظاہرین نے واپڈا، این ایچ اے کو 25جولائی تک ڈیڈ لائن دی،مسائل حل نہیں ہوئے تو 26جولائی کو دوبارہ احتجاجی تحریک شروع کی جائے گی جس کی تمام تر ذمہ داری واپڈا اور این ایچ اے پر عائد ہوگی۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...