چھوٹی دکانوں پر فکسڈ لیکن بڑی دکانوں سے کس طریقے سے ٹیکس وصولی کی تجویز زیرغور ہے؟ چیئرمین ایف بی آر نے اعلان کردیا

چھوٹی دکانوں پر فکسڈ لیکن بڑی دکانوں سے کس طریقے سے ٹیکس وصولی کی تجویز ...
چھوٹی دکانوں پر فکسڈ لیکن بڑی دکانوں سے کس طریقے سے ٹیکس وصولی کی تجویز زیرغور ہے؟ چیئرمین ایف بی آر نے اعلان کردیا

  


لاہور(خبرایجنسیاں )چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو شبر زیدی نے کہا ہے کہ چھوٹی دکانوں پر فکسڈ، بڑی دکانوں پر بجلی بل کے مطابق سیلز ٹیکس کی تجویز،سیمنٹ اور شوگرڈیلرز ٹیکس نیٹ میں آنا نہیں چاہتے تو بتادیں، گھی کی قیمت نہیںبڑھنے دینگے،افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کے غلط استعمال ، اسمگلنگ اور انڈر انوائسنگ کا مسئلہ حل کئے بغیر ملکی صنعت نہیں چل سکتی، ریٹیلرز کیلئے 3 حصوں پر مشتمل ٹیکس کانیا نظام تشکیل دیدیا ،31لاکھ کمرشل صارفین کا ڈیٹا ہمارے پاس ،کسی کا ماضی نہیں کھولیں گےدوسری جانب وزیرمملکت برائے ریونیو حماداظہر نے کہاہےکہ خطے میں پاکستان کا ٹیکس ٹوجی ڈی پی ریشو 11فیصد ہے اس میں 3سے 4فیصد اضافہ کرنا ہے نہیں تو فیڈریشن دیوالیہ ہوجائے گی ، ملک میں ٹیکس کا نظام تبدیلی کے مرحلے سے گزر رہا ہے جس میں مسائل بھی آئیں گے ہم بزنس میں کمیونٹی سے کسی بھی وقت دور نہیں رہیں گے اس ضمن میں بزنس کمیونٹی کی تجاویز پر سنجیدگی سے غور کریں گے ،ہماری توجہ ٹیکس بیس براڈننگ ،ڈاکومنٹیشن اور ڈیٹا بیس کو منٹین کرنے پر ہے کوشش ہے کہ ملک بھر میں سیلز ٹیکس کا ایک نظام ہو ۔ ان خیالات کااظہارانہوںنے گزشتہ روز لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں بزنس میں کمیونٹی سے خطاب اور سوالات کے جواب دیتے ہوئے کیا ۔چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو شبر زیدی نے کہا ہے کہ ڈیلرز اور ڈسٹری بیوٹرز کو ٹیکس نیٹ میں آنا چاہیے، چیمبرز فیصلہ کرلیں وہ ٹیکس نیٹ میں نہیں آنا چاہتے تو وزیر اعظم کو بتا دیتا ہوں، وفاقی بجٹ کا بنیادی مقصد صنعتی شعبے کی ترقی اور روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنا ہے، تاجروں کی کسٹم ڈیوٹی، ویلیوایشن اور کلیئرنس سے متعلقہ مشکلات کو مدنظر رکھتے ہوئے گرین چینل کی شرح ساٹھ فیصد تک بڑھانے کی تجویز زیر غور ہےسیلز ٹیکس رجسٹریشن کا عمل خودکار کردیا گیا ہے جبکہ امپورٹرز کے لیے سرٹیفیکیشن کا عمل بھی جلد ہی خودکار کردیا جائے گا۔ انہوںنے کہاکہ ریفنڈز کے سلسلے میں بانڈز پہلے ہی جاری کیے جاچکے ہیں، اگر ریفنڈز کے موجودہ سسٹم نے کام نہ کیا تو زیرریٹنگ پر دوبارہ کاروباری برادری سے بات کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایف بی آر چھوٹے اور درمیانے درجے کے اسٹیل میلرز کے لیے علیحدہ قانون سازی پر غور کرے گا۔انہوں نے کہا کہ خریدار کے قومی شناختی کارڈ کی تفصیلات حاصل کرنے کی شرط ابھی لاگو نہیں ہوئی۔ انہوںنے کہاکہ گزشتہ دنوں وزیراعظم اور آرمی چیف کے ساتھ اجلاس میں فیصلہ کیاگیا ہے کہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کے ذریعے سمگلنگ اور انڈ انوائسنگ کے خاتمے کیلئے جلد آپریشن شروع کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ٹیکسز کے حوالے سے بزنس کمیونٹی کے تحفظات دور کریں گے لیکن جس نے کاروبار کرنا ہے اس ٹیکس تو دینا ہی پڑے گا ۔حما داظہر نے کہاکہ ملک میں زیرو ریٹڈ رجیم جب آیا اس وقت ٹیکسٹائل کی ملک میں 5فیصدسیلز تھیں جو اب 50فیصد ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہم آڈٹ کم سے کم کریں گے تاکہ کاروباری برادری ہراساں نہ ہو ۔لاہور چیمبر کے قائم مقام صدر فہیم الرحمن سہگل نے کہا کہ بجٹ کی کچھ شقیں کاروباری سرگرمیوں کے لیے سازگار نہیں، ٹیکسوں کی شرح میں اضافہ خاص طور پر درآمدی ڈیوٹی بڑھنے سے سمگلنگ میں اضافہ ہوگا اور ملک میں بلیک اکانومی مزید فروغ پائے گی،باہمی مشاورت سے ان پر نظرِ ثانی کی جائے ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...