سعودی عرب نے اس سال فریضہ حج ادا کرنے والے خوش نصیبوں کے انتخاب کے معیار کا اعلان کردیا

سعودی عرب نے اس سال فریضہ حج ادا کرنے والے خوش نصیبوں کے انتخاب کے معیار کا ...
سعودی عرب نے اس سال فریضہ حج ادا کرنے والے خوش نصیبوں کے انتخاب کے معیار کا اعلان کردیا

  

ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی عرب نے اس سال فریضہ حج ادا کرنے والے خوش نصیبوں کے انتخاب کے معیار کا اعلان کردیا ہے اور ان کے انتخاب میں صحت کے معیارات کو اوّلین ترجیح اور مرکزی حیثیت حاصل ہوگی۔سعودی پریس ایجنس کی رپورٹ کے مطابق اس مرتبہ عازمینِ حج میں سعودی عرب میں مقیم غیرملکی تارکینِ وطن کی تعداد 70 فی صد ہوگی اور 30 فی صد سعودی شہری حج ادا کریں گے۔

حجاج کرام کا دوسرا معیار یہ ہوگا کہ صرف ان سعودی شہری اور غیرملکی طبی کارکنان اور سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کو حج کی اجازت دی جائے گی جو کورونا وائرس کا شکار ہوگئے تھے مگر اب صحت یاب ہوچکے ہیں۔ان کے انتخاب کو ترجیح دینے کا مقصد مملکت میں کورونا وائرس کی وَبا کے خلاف جنگ میں ان کی شبانہ روز کاوشوں کو سراہنا اور ایک طرح سے انہیںخراجِ تحسین پیش کرنا ہے۔

سعودی حکام کووِڈ-19 کے خلاف جنگ میں محاذاوّل پر خدمات انجام دینے والے ایسے ملازمین کے انتخاب کے لیے ڈیٹا بیس کو استعمال کریں گے جو خود بھی اس جان لیوا وائرس کا شکار ہوگئے مگر بعد میں تن درست ہوگئے ہیں۔ایس پی اے نے بتایا ہے کہ حجاج کرام کے انتخاب میں سعودی عرب میں مقیم 20 سے 50 سال کے درمیان عمر کے حامل غیر سعودیوں کو ترجیح دی جائے گی۔تاہم انہیں عازمینِ حج کی فہرست میں شامل ہونے کے لیے مندرجہ ذیل معیار پر پورا اترنا ہوگا،ان کے پاس پی سی آر کے ٹیسٹ کا سرٹی فکیٹ ہو اور اس میں ان کے نتائج منفی ظاہر ہورہے ہوں۔وزارتِ صحت کے فیصلے کے بعد انہیں فریضہ حج ادا کرنے سے پہلے اور بعد میں مقررہ مدت قرنطینہ میں گزارنا ہوگی۔سعودی عرب کی وزارتِ صحت نے عازمینِ حج کے لیے بہت اعلیٰ معیارات وضع کیے ہیں اور سخت حفاظتی احتیاطی تدابیر کا نفاذ کیا جارہا ہے۔سعودی عرب کے مرکز برائے انسدادِ امراض اور کنٹرول نے اتوار کو آیندہ حج سیزن کے لیے کرونا وائرس سے متعلق حفاظتی تدابیر اور پابندیوں کی ایک فہرست جاری کی تھی۔ تمام عازمین حج کو اس کی لازماً پاسداری کرنا ہوگی۔

مزید :

عرب دنیا -