لاہور ہائیکورٹ کا عملہ ارجنٹ درخواستوں کو وصول نہیں کر رہا،سابق جج

لاہور ہائیکورٹ کا عملہ ارجنٹ درخواستوں کو وصول نہیں کر رہا،سابق جج

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سینئر قانون دان اور لاہورہائی کورٹ کے سابق جج پرویز عنایت ملک نے اپنے ایک بیان میں لاہورہائی کورٹ انتظامیہ اور لاہورہائی کورٹ بار کی توجہ مبذول کروائی ہے کہ ہائی کورٹ کا عملہ حکم امتناعی کی درخواست بھی وصول کرنے سے انکار کر رہاہے، ڈائری نمبر بھی نہیں دیا جارہا، تحریری اعتراض لگانے کی بجائے درخواستیں وصول کرنے سے ہی انکار کیا جارہاہے، انہوں نے کہا کہ ہمارا ماضی کا تجربہ بتاتا ہے اگر کبھی درخواستوں یا اپیلوں کے مقررہ مدت کے اندر دائرنہ ہونے کو سوال آتاہے تو عدالتیں بغیر ثبوت کے ہماری بات تسلیم نہیں کرتیں اور یہ کلرک صاحبان مکر جاتے ہیں، عدالت کے روبرو کہتے ہیں ہمارے پاس درخواست لے کر ہی نہیں آئے،انہوں نے مطالبہ کیا کہ لاہورہائی کورٹ کی دائری برانچ اورارجنٹ سیل کوپابند کیاجائے کہ اگر کوئی درخواست تعطیلات میں قابل سماعت نہیں تو اعتراض لگا کر واپس کی جائے تاکہ معاملہ ریکارڈ پررہے،لاہور ہائی کورٹ میں دائری برانچ اور ارجنٹ سیل کو صرف جونیئر کلرکوں کے رحم و کرم پر نہ چھوڑیں، قانون کی عمل داری یقینی بنائیں۔

درخواستیں،انکار

مزید :

صفحہ آخر -