لاکھوں روپے لوٹنے والے ڈاکوؤں کی گرفتاری کیلئے حکومت کو ڈیڈ لائن

لاکھوں روپے لوٹنے والے ڈاکوؤں کی گرفتاری کیلئے حکومت کو ڈیڈ لائن

  

بنوں (بیورورپورٹ)ضلع بنوں کی تاجر برادری نے بنوں کوہاٹ روڈ پر آٹا گھی تاجر سے گن پوائنٹ پر32لاکھ49ہزار روپے لوٹنے والے ڈاکوؤں کی گرفتاری کیلئے آکری بار جمعہ کے روز تک ڈیڈ لائن دیتے ہوئے ہفتے سے ڈی آئی جی بنوں کے دفتر کے سامنے دھرنا دینے سمیت بنوں کی تمام سڑکوں کو ٹائر جلاکر اور رکاوٹیں کھڑی کرکے بند کرنے کا اعلان کردیا تاجروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیمبر آف کامرس کے صدر شاہ وزیر خان،جنرل سیکرٹری غلام قیباز خان اور آٹا وچینی ڈیلرز ایسوسی ایشن کے صدر ناصر خان نے کہا کہ بنوں میں تاجروں کو دن دیہاڑے گن پوائنٹ پر لوٹنے کی وارداتیں معمول بن گئیں ہیں لیکن پولیس تا حال ڈاکوؤں کو گرفتار کے بجائے صرف تسلیاں دے رہی ہیں ہم نے بار باراحتجاج کرکے انتظامیہ کے کہنے پر مہلت دی لیکن پولیس ناکام رہی اب چونکہ ڈی پی او بھی نئے آگئے ہیں ڈی ایس پی اور تھانہ صدر کے ایس ایچ او بھی نئے ہیں اور وہ کافی کوششیں بھی کررہے ہیں جسکی وجہ سے ہم ایک بار پھر انکی مہمان نوازی کرتے ہوئے جمعہ کے روز تک مہلت دیتے ہیں لیکن اگر جمعہ تک ڈاکو گرفتار نہ ہوئے اور چھینی گئی رقم برآمد نہ کی گئی تو تاجروں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے اور ہم مذید مہلت نہیں دے سکتے اب تک ہم پر امن احتجاج کررہے تھے لیکن اسکے بعد راست اقدامات پر بھی مجبور ہوسکتے ہیں کیونکہ تاجروں کے ٹیکسوں سے پولیس کو اور آفسران کو تنخواہیں ملتی ہیں ملکی نظام کا پہیہ چلتا ہے لیکن پولیس تحفظ دینے کے بجائے تاجروں کو پرائیویٹ سیکورٹی گارڈ رکھنے کا مشورہ دے رہی ہے تو پھر پولیس کا کیا کام ہے مذید کہا کہ ایک طرف ڈاکو لوٹ رہے ہیں تو دوسری طرف ضلعی انتظامیہ اور فوڈ اتھارٹی والوں نے بھاری جرمانوں کے ذریعے تاجروں کا جینا حرام کردیا ہے اور اگر تاجروں کے ساتھ یہی رویہ جاری رہا تو تاجر بغاوت کرنے پر بھی مجبور ہوسکتے ہیں اور پھر ضلعی انتظامیہ کے فیصلوں سے انکار بھی کرسکتی ہے۔اور اگر ضلعی انتظامیہ اور پولیس تاجروں کے مسائل حل کرتی ہے اور انہیں تحفظ فراہم کرتی ہے تو ہم بھر پور تعاون پہلے بھی کرتے آرہے ہیں آئندہ بھی جاری رکھیں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -