قرآن پاک کی تعلیم دینے پر مولانا ایاز الحق قاسمی کی گرفتاری ورہائی

قرآن پاک کی تعلیم دینے پر مولانا ایاز الحق قاسمی کی گرفتاری ورہائی

  

ملتان (سٹی رپورٹر)جمیعت علماء اسلام ضلع ملتان کے امیر مولانا ایاز الحق قاسمی کو گزشتہ روز تھانہ شاہ رکن عالم کی پولیس نے گرفتار کر لیا۔ تاہم بعد ازاں انہیں رہا کر دیا گیا۔ پولیس زرائع کے مطابق انہیں سکول میں حفظ کی کلاسز جاری رکھنے رکھنے پر حراست میں لیا گیا جبکہ جے یو آئی کے ضلعی امیر مولانا ایاز الحق قاسمی نے اس الزام کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ وفاق(بقیہ نمبر51صفحہ6پر)

المدارس العربیہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق پاکستان بھر کے تمام مدارس میں حفظ کی کلاسز کا آغاز کر دیا گیا ہے، لہذا ہم نے اسی نوٹیفکیشن کی روشنی میں اپنے ادارے میں حفظ کی کلاسز کا آغاز کیا جس پر تھانہ شاہ رکن عالم پولیس نے زبردستی تھانے لے جا کر بدتمیزی کی۔ دریں اثناء ایس اوپیز کی رعایت رکھنے کے باوجود قرآن کریم کی تعلیم دینے پر جمعیت علماء اسلام ضلع ملتان کے امیر مولانا ایاز الحق قاسمی کی گرفتاری اور رہائی پر وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے ناظم اعلیٰ مولانا محمد حنیف جالندھری، جنوبی پنجاب کے راہنماؤں مولانا زبیر احمد صدیقی، مولانا محمد نواز، مولانا ارشاد احمد، مولانا ظفر احمد قاسم،مولانا قاری محمد ادریس، مولانا احمد حنیف جالندھری، مولانا مفتی عامر محمود نے سخت احتجاج کرتے ہوئے غیر قانونی طور پر چھاپے مارنے اور دینی اداریکا تقدس پامال کرنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ علماء کرام نے ہمیشہ آئین و قانون کی پاسداری کی ہے، کرونا وائرس کے سلسلہ میں بنائے گئے قواعد و ضوابط پر سب سے زیادہ عمل مساجد و دینی مدارس میں ہوا،وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے راہنماؤں نے کہا کہ علماء ومشائخ اور دینی مدارس کے تقدس کی پامالی نا قابلِ برداشت ہے، انہوں نے کہا کہ مدارس اور علماء کو تر نوالہ نہ سمجھا جائے، پنجاب حکومت دینی مدارس کاتقدس پامال کرنے اور بلاجواز گرفتاری کا فوری نوٹس لے اور ذمہ دار پولیس اہلکاروں کو فوری معطل کرے، راہنماؤں نے دینی مدارس سے اپیل کی کہ وہ احتیاطی تدابیر پر عمل کرتے ہوئے مقامی بچوں اور بچیوں کی قرآن کریم کی تعلیم جاری رکھیں اور ملک سے وباء کے خاتمہ اور ملکی سلامتی کے لیے دعائیں کرواتے رہیں اور 11 جولائی سے احتیاطی تدابیر کے ساتھ امتحانات کا انعقاد کریں۔

گرفتاری

مزید :

ملتان صفحہ آخر -