مہنگائی بے روزگاری میں اضافہ، غریب کہاں جائیں، کس سے فریاد کریں:ذیشان اختر

  مہنگائی بے روزگاری میں اضافہ، غریب کہاں جائیں، کس سے فریاد کریں:ذیشان اختر

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر نے کہاہے کہ اللہ تعالیٰ نے آکسیجن کی نعمت نہ دی ہوتی تو حکمرانوں نے سانس لینے پر بھی ٹیکس لگادینا تھا۔ عوام 42 قسم کے ٹیکس(بقیہ نمبر45صفحہ6پر)

دے رہے ہیں اور حکومت دعوے کر رہی ہے کہ ہم نے ٹیکس فری بجٹ پیش کیا ہے۔اگر مہنگائی و بے روزگاری کی یہی صورتحال رہی تو خدانخواستہ آنیوالے دنوں میں لوگ بھیک مانگنے پر مجبور ہو جائیں گے۔ اور ان کو دینے والا بھی کوئی نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا ہے کہ ایڈیٹر جنرل کی رپورٹ چشم کشا ہے جس میں ایڈیٹر جنرل نے کہا ہے کہ وفاقی وزراء کے محکموں میں 270 ارب روپے کی کرپشن ہے یہ ابھی دیگ کا ا یک دانہ ہے۔ جب پوری دیگ سامنے آئے گی تو لوگ منہ میں انگلیاں دبانے پر مجبور ہو جائیں گے۔ یہی پی ٹی آئی تھی جس نے پاکستان کو کرپشن فری بنانے اور کڑے احتساب کا نعرہ لگایا تھا۔ یہاں پرسوال وفاقی وزراء کا ہے اگر وہ کرپشن کرینگے تو ان کے محکموں کے افسروں کا کیا حال ہوگا۔

ذیشان اختر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -