ڈہرکی،ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن، کئی کمین گاہیں تباہ کرنیکا پولیس دعویٰ

  ڈہرکی،ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن، کئی کمین گاہیں تباہ کرنیکا پولیس دعویٰ

  

ڈہرکی(نامہ نگار) رونتی کے کچے کے علاقے میں پولیس کا ڈاکوؤں کے خلاف آج بھی آپریشن جاری لیکن پولیس کی طرف سے پیش قدمی نہ کرنے کی وجہ سے کوئی کامیابی نہ مل سکی جبکہ ضلعی پولیس ترجمان کی جاری کردہ پریس ریلیز میں ڈاکوؤں کی کئی کمین گاہیں تباہ کرنے (بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

اور تین ڈاکوؤں کوزخمی کرنے کا بھی دعویٰ کیاگیا ہے تفصیلات کے مطابق گاؤں عمر شر کے قریب ڈاکوؤں اور پولیس کے درمیان دو روز سے شدید فائرنگ کا تبادلہ جاری ہے ڈاکوؤں کی طرف سے راکٹ لانچر کے گولے بھی فائر کیئے جارہے ہیں بھاری نفری کئی بکتر بند گاڑیاں جدید اسلحہ ہونے کیباوجود پولیس ڈاکوؤں کی کمین گاہ کے چند قدم فاصلے پر پچھلے 36گھنٹوں سے پیش قدمی کرنے کے بجائے محفوظ مقام بیا پولیس پیکٹ نمبر 1 پر روکے ہوئے ہیں جسکی وجہ سے پولیس کوتاحال کوئی کامیابی نہیں مل سکی ہے جبکہ پولیس آپریشن میں سیکڑوں کی تعداد میں پولیس کے کمانڈوزبھی حصہ لے رہے ہیں ڈاکوؤں کے خلاف آپریشن میں 5 بکتر بند گاڑی شامل ہیں جبکہ آپریشن کی قیادت کرنے والے کچے کے ڈی ایس پی آصف آرائیں نے ڈاکوؤں کے خلاف فیصلہ کن کارروائی کرنیکیلئے آپر?شن میں حصہ لینے والی پولیس پارٹی کو آگے بڑھنیکاحکم دینے کے بجائے ہاتھ والے اسپیکر کے ذریعے دو دن سے ڈاکو?ں کو وارننگ دیتے ہوئے بار بار کہہ رہا ہے کہ تم پولیس کے گھیرے میں ہو لہذا اپنے آپکو پولیس کے حوالے کردو جبکہ یہ اطلاعات بھی موصول ہوئی ہیں کہ ڈاکوؤں نے اپنے اہل خانہ کو محفوظ مقامات دریا کے نوگو ایریا میں منتقل کردیاہے اور وہاں پرپولیس جانے سیقاصردیکھائی دے رہی ہیں جہاں پر ڈاکو کی بڑی تعداد میں اور جدید اسلحہ کے ساتھ موجود ہیں اور اسی علاقہ سے چار روز قبل بھی ڈاکوؤں نے پولیس پارٹی پر راکٹ لانچر اور اینٹی ایئر کرافٹ سے بکتر بند پر حملہ کیا تھا جس سے ایک پولیس اہلکار خان محمد پہنور شہید ہواتھا اور دو ایس ایچ او سمیت 7 پولیس اہلکار زخمی ہوگئے تھے جبکہ دوسری ایس ایس پی گھوٹکی کے پریس ترجمان اور پی آر او کی جاری کردہ پریس ریلیز میں مندرجہ ذیل بیان دیا گیا ہے کہ ایس۔ایس۔پی گھوٹکی ڈاکٹر فرخ علی کی قیادت میں رونتی کچہ میں ڈاکوؤں کے خلاف آپریشن جاری پولیس کارونتی کچہ میں ڈاکوؤں کے خلاف آپریشن کامیابی سے جاری ہے پولیس کی جانب سے ڈاکوؤں کی کئی کمین گاہیں تباہ کر دی گئیں ہیں ڈاکوؤں کے خلاف گھیرا تنگ کر دیا ہے پولیس نے ڈاکوؤں کی نقل و حرکت مکمل طور بند کر دی ہے اور انکی سپلائی لائن کو دھچکا پہنچا ہے پولیس نے ڈاکوؤں کے نئے اسلحہ اور ایمونیشن کی سپلائی کو مکمل طور پہ بند کر دیا ہے پولیس کی جانب سے مزید پولیس پکٹیں قائم کر دی گئی ہیں ڈاکوؤں کی موجودگی تک آپریشن جاری رہے گا۔ایس۔ایس۔پی گھوٹکی ڈاکٹر فرخ علی پولیس کے جاری آپریشن میں آج 3 ڈاکوؤں کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔

دعویٰ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -