جیلوں میں قیدیوں کو ملاقات کی اجازت دیدی گئی،زواروڑائچ

  جیلوں میں قیدیوں کو ملاقات کی اجازت دیدی گئی،زواروڑائچ

  

لودہراں (نمائندہ پاکستان) جیلوں میں قیدیوں کو ملاقات کی اجازت دیدی گئی ہے، جیلوں میں سہولیات کی فراہمی اور قیدیوں کے مسائل کے حل کے لئے وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایات پر اقدامات کئے جارہے ہیں ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر جیل خانہ جات چوہدری زوار حسین وڑائچ نے ڈسٹرکٹ جیل لودہراں کے دورے کے بعد صحافیوں سے بات(بقیہ نمبر1صفحہ6پر)

چیت کرتے ہوئے کیا قبل ازیں انہوں نے جیل میں ہسپتال، کچن، بیرکوں، کھانے کے لئے بنائے گئے سٹور سمیت مختلف شعبہ جات کا معائنہ کیا بیرکوں میں جاکر قیدیوں سے مسائل دریافت کئے اور کورونا ایس و پیز پر عملدرآمد کا جائزہ لیا انہوں نے جیل میں سہولیات کی فراہمی کے لئے جیل سپرنٹنڈنٹ کامران اسد بخاری سے تفصیلی بریفنگ لیتے ہوئے مسائل کے جلد حل کی یقین دہانی کرائی اس موقع پر انہوں نے بتایا کہ پنجاب بھر کی جیلوں میں قیدیوں سے ملاقاتوں کی اجازت دیدی گئی ہے تاہم کورونا کی وباء کے باعث 15 دن بعد قیدی سے ایک رشتہ دار ملاقات کر سکتا ہے جس کے دوران قیدی اور ملاقاتی کے درمیان 6 فٹ کا فاصلہ لازمی رکھا جائے گا، قیدی اور ملاقاتی کے درمیان پلاسٹک شیٹ بھی لگائی جائے گی انہوں نے دورہ کے دوران جیل سیکورٹی اور قیدیوں کے لیے سہولیات کا تفصیلی جائزہ لیا اور جیل حکام کو ہدایت کی کہ جیل میں ہر بیرک کے باہر شکایت بکس لگائے جائیں۔اس موقع پر ضلعی عشر زکواۃ کمیٹی کے چئیرمین ارشاد عباس گھلو، چوہدری اصغر ڈھلوں، وقار حسن گوندل، سابق صدر بار میاں محمد اکبر آرائیں، پنجاب بار کونسل کی جیل ریفارم سب کمیٹی کے چئیرمین راؤ عمر جاوید ایڈووکیٹ، عزیز بلوچ اور راؤ جاوید ٹھاکر بھی ہمراہ تھے۔

ملاقات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -