قانون آپ کو کسی پنشنر کی پنشن سے کٹوتی کااختیار نہیں دیتا،اسلا م آبادہائیکورٹ،پوسٹل سروسز کو 14 جولائی تک تفصیلی جواب جمع کرانے کا حکم

قانون آپ کو کسی پنشنر کی پنشن سے کٹوتی کااختیار نہیں دیتا،اسلا م ...
قانون آپ کو کسی پنشنر کی پنشن سے کٹوتی کااختیار نہیں دیتا،اسلا م آبادہائیکورٹ،پوسٹل سروسز کو 14 جولائی تک تفصیلی جواب جمع کرانے کا حکم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے ریٹائرڈ ملازمین کی پنشن ادائیگی نجی بینک کو آﺅٹ سورس کرنے کے خلاف کیس میں پوسٹل سروسز کو 14 جولائی تک تفصیلی جواب جمع کرانے کا حکم دیدیا،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ قانون آپ کو کسی پنشنر کی پنشن سے کٹوتی کااختیار نہیں دیتا۔

نجی ٹی وی کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں ریٹائرڈ ملازمین کی پنشن ادائیگی نجی بینک کو آﺅٹ سورس کرنے کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی، عدالت نے نمائندہ پوسٹل سروس سے استفسار کیا کہ کس قانون کے تحت آپ پنشنر سے سروس چارجز کاٹتے ہیں ؟،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ گریڈایک سے 16 تک آپ پنشنر سے ڈیڈکشن کیسے کرسکتے ہیں ؟۔

نمائندہ پوسٹل سروسز نے کہاکہ ہم نے اوریجنل پنشن سے کوئی کٹوتی نہیں کی،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ پبلک منی آپ کیوں خرچ کررہے ہیں ؟،آپ ریفارمز لا رہے ہیں عدالت آپ کو سراہتی ہے ۔

نمائندہ پی او پی نے کہاکہ پاکستا ن کو گرے لسٹ میں ڈالا گیا اس میں پوسٹ آفس سے کچھ متعلقہ نکات ہیں،نمائندہ پوسٹل سروسز نے کہاکہ نجی بینک کو آﺅٹ سورس کرنے سے متعلق پراسس میں 120 دن لگے ،عدالت نے کہاکہ قانون آپ کو کسی پنشنر کی پنشن سے کٹوتی کااختیار نہیں دیتا۔

اسلام آبادہائیکورٹ نے پوسٹل سروسز کو 14 جولائی تک تفصیلی جواب جمع کرانے کا حکم دیدیا،عدالت نے کنٹرولر جنرل ملٹری اکاﺅنٹس اوراکاﺅنٹنٹ جنرل کوبھی جواب جمع کرانے کا حکم دیدیا،عدالت نے فریقین سے جواب طلب کرتے ہوئے سماعت21 جولائی تک ملتوی کردی ۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -