یہ وہ رپورٹ نہیں جو جے آئی ٹی نے ریلیز کی ،وفاقی وزیر علی زیدی کی چیف جسٹس سپریم کورٹ سے نوٹس لینے کی اپیل

یہ وہ رپورٹ نہیں جو جے آئی ٹی نے ریلیز کی ،وفاقی وزیر علی زیدی کی چیف جسٹس ...
یہ وہ رپورٹ نہیں جو جے آئی ٹی نے ریلیز کی ،وفاقی وزیر علی زیدی کی چیف جسٹس سپریم کورٹ سے نوٹس لینے کی اپیل

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیر علی زیدی نے کہاہے کہ یہ وہ رپورٹ نہیں جو جے آئی ٹی نے ریلیز کی ،جے آئی ٹی کی رپورٹ کے ہر صفحے پر دستخط ہیں ،جے آئی ٹی میں 6 لوگ تھے، اس رپورٹ میں ان کے دستخط نہیں جو سندھ حکومت کے ماتحت تھے ،وفاقی وزیر نے کہاکہ میں چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کرتا ہوں کہ اس معاملے پر ازخود نوٹس لیں،جس کا بھی نام جے آئی ٹی میں ہے اس سے تفتیش کی جائے۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے سینٹر شبلی فراز کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ گزشتہ رات سے جے آئی ٹی سے متعلق بات کی جارہی ہے ،ترقی یافتہ ممالک میں دائیں اوربائیں بازوکی سیاست ہوتی ہے،پاکستان میں صحیح اورغلط کی سیاست کی جا رہی ہے،تحریک انصاف ملک بدلنے اور صحیح راہ پر لانے کیلئے اقتدار میں آئی ہے ،ملک کو درست ڈگر پر ڈالنے کیلئے سزاوجزاکانظام لاگو کرناہوگا،ہم بڑی جدوجہد کے بعداقتدارمیں آئے،علی زیدی نے کہاکہ ہم انتظار کررہے تھے کہ سندھ حکومت جے آئی ٹی رپورٹ پبلک کرے،اللہ اللہ کرکے سندھ حکومت نے جے آئی ٹی رپورٹ پبلک کردی،جے آئی ٹی رپورٹس پبلک کرانے کیلئے عدالت میں طویل جدوجہد کرنی پڑی ،2017 میں چیف سیکرٹری سندھ کو میں نے خط لکھا،2017 میں چیف سیکرٹری سے جے آئی ٹی رپورٹ مانگی ،عدالتی حکم کے باوجود سندھ حکومت نے جے آئی ٹی پبلک نہیں کی،پیپلزپارٹی کے ایک وزیراعظم توہین عدالت پر پہلے نااہل ہو چکے ہیں جو لوگ بجٹ پر تقریر فرما رہے ہیں وہ تو گینگسٹر کے لیڈر ہیں ۔

وفاقی وزیر نے کہاکہ جے آئی ٹی رپورٹ میں اس بات کا ذکر نہیں قتل کس کے کہنے پر کئے گئے ،عزیر بلوچ پاگل ہے کسی کے کہنے کے بغیر گینگ بنالیا اور قتل کئے ،عزیربلوچ نے جے آئی ٹی میں اپنے بیان میں کہاہے کہ یوسف بلوچ کے کہنے پر قائم علی شاہ اور فریال تالپور سے ملا،نبیل گبول نے گزشتہ روز کہا ہے کہ جے آئی ٹی رپورٹس مکمل نہیں ،انہوں نے کہاکہ عزیر بلوچ نے کہاکہ آصف زرداری اور فریال تالپور کے کہنے پر سر کی قیمت ختم کی گئی ۔

وفاقی وزیر نے کہاکہ جے آئی ٹی میں عزیر بلوچ نے سائیکل چوری کی بات نہیں کی ، عزیر بلوچ خود158 افراد کے قتل کا اقبال جرم کر چکا ہے ،جے آئی ٹی رپورٹ میں جرم تسلیم کیاگیا لیکن جرم کرانے والے کا کوئی ذکر نہیں ،علی زیدی نے کہاکہ جے آئی ٹی رپورٹ میں ہونے والے انکشافات چشم کشا ہیں،الیکشن جیتنے کے بعدفریال تالپور قائم علی شاہ نے عزیر بلوچ کے ہمراہ لیاری کادورہ کیا،عزیر بلوچ کے مطابق پیپلزپارٹی کی قیادت سے انہیں اور اہلخانہ کو جان کا خطرہ ہے،بدقسمتی سے ماضی میں ملک کے اداروں کو تباہ و برباد کیا گیا، اندرون سندھ جرائم کے بارے میں پولیس افسر ڈاکٹر رضوان کی رپورٹ ہوشربا تھی،رپورٹ میں سعید غنی کے بھائی کو منشیات فروشوں کاسہولت کار قراردیا گیا،سندھ حکومت نے ڈاکٹر رضوان کو رپورٹ جاری کرنے پر ٹرانسفر کر دیاگیا۔

وفاقی وزیر علی زیدی کا مزید کہناتھا کہ ماضی میںجے آئی ٹی رپورٹ کیلئے سندھ حکومت کو درخواستیں دیں، سندھ حکومت کے انکار پر رپورٹ کیلئے سندھ ہائیکورٹ سے رجوع کیا،سب کو پتہ ہے کراچی میں کیسے تھانے بکتے ہیں ،

انہوں نے کہاکہ یہ وہ رپورٹ نہیں جو جے آئی ٹی نے ریلیز کی ،جے آئی ٹی کی رپورٹ کے ہر صفحے پر دستخط ہیں، جے آئی ٹی میں 6 لوگ تھے ،اس رپورٹ میں ان کے دستخط نہیں جو سندھ حکومت کے ماتحت تھے ،میرے پاس جو جے آئی ٹی ہے اس کے ہر صفحے پرعزیر بلوچ کے دستخط ہیں،وفاقی وزیر نے کہاکہ میں چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کرتا ہوں کہ اس معاملے پر ازخود نوٹس لیں،جس کا بھی نام جے آئی ٹی میں ہے اس سے تفتیش کی جائے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -