در سگا ہو ں کو "انصا ف" ملنے کا امکا ن ،قبرستا ن میں کھلے سکو ل بتا تے ہیں حکو مت فیل ہو گئی : چیف جسٹس

در سگا ہو ں کو "انصا ف" ملنے کا امکا ن ،قبرستا ن میں کھلے سکو ل بتا تے ہیں حکو مت ...
در سگا ہو ں کو

  

اسلام آ باد(مانیٹرنگ ڈیسک)چیف جسٹس افتخارمحمد چودھری نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت نے لیپ ٹاپ سکیم کےلئے لاکھوں روپے خرچ کیے لیکن تعلیم قبرستانوں میں مل رہی ہے۔پنجاب میں سکولوں کی حالت زارسے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ گوجرانوالہ میں سکول کی بچیاں قبرستان میں تعلیم حاصل کررہی ہیں، قبرستان میں سکول ہونے پریہ کہنے کی ضرورت ہے کہ حکومت فیل ہوچکی ہے۔ ججزکالونی اورپارلیمنٹ اچھی جگہ ہیں ورنہ دارالحکومت میں بھی لوگوں کوبنیادی سہولیات میسرنہیں۔ پنجاب میں سکول کے بچوں کےلئے نہ توشیلٹر ہے اورنہ استاد ایسی جگہوں پردانش سکول کیوں نہیں بنائے جاتے۔ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے عدالت کوبتایا کہ خبرچھپنے کے بعد پنجاب حکومت نے سکول کے لیے چارکروڑروپے مختص کردیے ہیںاور عمارت کی تعمیرکےلئے ٹینڈربھی جاری کردیا گیا ہے۔جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیے کہ جب تک کوئی معاملہ سپریم کورٹ میں نہیں آتا، حکومت خود سے کچھ بھی نہیں کرتی۔ سپریم کورٹ نے پورے ملک میں سرکاری سکولوں کی حالت سے متعلق رپورٹ طلب کرلی۔عدالت نے تمام صوبائی چیف سیکریٹریوں اورایڈووکیٹ جنرل صاحبان کورپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت چارہفتوں کےلئے ملتوی کردی۔

مزید :

تعلیم و صحت -