امن کا پرچار کرنا اسلام کے فلسفہ جہاد کے منافی نہیں،پروفیسر لیاقت صدیقی

امن کا پرچار کرنا اسلام کے فلسفہ جہاد کے منافی نہیں،پروفیسر لیاقت صدیقی

  



لاہور(نمائندہ خصوصی)امن کاپرچار کرنا اسلام کے فلسفہ جہاد کے منافی نہیں ہے۔اسلام اورپاکستان دشمن قوتوں کے ناپاک عزائم کواتحاد کی قوت سے ناکام جائے۔برمامیں مسلمانوں کاقتل عام ’’عالمی امن‘‘کے خطرہ ہے۔برمی مسلمانوں کیخلاف مظالم پر عالمی اداروں کی خاموشی مجرمانہ ہے ان خیالات کااظہارنعیمین ایسوسی ایشن پاکستان کے مرکزی صدرپروفیسر لیات علی صدیقی اورمرکزی جنرل سیکرٹری پیرسیدشہباز احمدسیفی نے گزشتہ روز جاری اپنے ایک بیان میں کیا۔انہوں نے مزیدکہاکہ برمی مسلمانوں پر ہونے والے مظالم بند کروائے جائیں۔ میانمار میں مسلمانوں کے ساتھ ہونے والے مظالم پر اقوام عالم کی بے حسی قابل افسوس ہے۔ برما میں مسلمانوں پر مظالم امت کیلئے ایک چیلنج ہے ہمیں اس حوالے سے ہر سطح پر آواز بلند کرنا ہوگی اگر ہم خاموش رہے تو تاریخ ہمیں کبھی معاف نہیں کرے گی۔ برما کے مسلمانوں کے ساتھ ہمارا رشتہ اسلام کا ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...