بجٹ میں معاشی سرگرمیاں پر مبشت اثرات مرتب ہو گے‘ عرفان اقبال شیخ

بجٹ میں معاشی سرگرمیاں پر مبشت اثرات مرتب ہو گے‘ عرفان اقبال شیخ

  



لاہور (کامرس رپورٹر)پاکستان انڈسڑیل اینڈ ٹریڈز ایسوسی ا یشن فرنٹ کے چیئرمین عرفان اقبال شیخ نے موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے 2015-16 کا بجٹ بزنس دوست قرار دیا ہے۔چئیرمین نے بجٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ وزیر خرانہ اسحاق ڈار نے تاجر برابری کی سفارشات کو اہمیت دی ہے جس سے ملک میں معاشی سرگرمیاں میں مبشت اثرات مرتب ہو گے۔عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ موجودہ حالات کے تناظر میں بہتر وفاقی بجٹ پیش کیا گیاہے جس کے ملک کی معشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔بجٹ میں اٹھائے گئے اقدامات کی بدولت گروتھ ریٹ بڑھے گااور ملک میں سرمایہ کاری بڑھے گی۔انھوں نے کہا کہ ترقیاتی سکیموں میں اضافے سے نوکریاں پیدا ہوں گی اور بیروزگاری میں کافی حد تک کمی ہو گی۔لیکن ترقیاتی سکیموں کے صحیح استعمال کو یقینی بناناہوگا۔انھوں نے کہا کہ 75 ہزار سے زائد بجلی کے بلوں پر 10%انکم ٹیکس عائد کرنا درست نہیں کیونکہ اس سے پیداواری لاگت بڑھ جائے گی اس کو ختم کیا جائے۔ Retail پر ابھی تک کوئی مکمل صورت حال سامنے نہیں آئی اور تاجر برادری میں اس معاملے پرغیر یقینی صورت حال سے دو چار ہے۔ وائس چیئرمین خواجہ شاہ زیب اکرم نے کہاکہ حکومت نے نئی سرمایا کاری اور برآمدات کے حوالے سے مراعات دی ہیں۔ موجودہ صنعتوں کے مسائل کے حل کے لیے بھی اقدامات کیے جانے چاہیں۔سینئر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی نے کہا کی بجٹ بہتر ہے تاجر برادری کی بہت سی تجویز کو مان لیا گیا ہے۔ایکسپورٹرز کے لئے قرضوں پر مارک اپ میں کمی خوش آئند ہے۔لیکن زیادہ تر لگائے گئے ٹیکس بالواسطہ ھیں اور ان ٹیکسوں سے افراط زر میں اضافہ ہو گا۔ FBRسے SROکے ذریعے مخصوص شعبوں کو ڈیوٹیوں و ٹیکسوں کو مستشنے قرار دینے کے اختیارات واپس لینا خوش آئند ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹیکس میں کیے گے اس اقدمات سے ٹیکس چوروں کی حوصلہ شکنی ہوگی۔جس سے ٹیکس میں اضافہ ہوگا۔

مزید : کامرس