بجٹ سے غریب طبقے کی خواہشات چکنا چور ہو گئیں،محمد جمیل

بجٹ سے غریب طبقے کی خواہشات چکنا چور ہو گئیں،محمد جمیل

  



لاہور(پ ر) پاکستان جمہوری اتحاد کے مرکزی صدرمحمد جمیل نے کہا ہے کہ وفاقی بجٹ میں عام آدمی کو یکسر نظر انداز کرکے مراعات یافتہ طبقے کو مزیدنوازنے کی کوشش کی گئی ہے جس سے غریب طبقات کی خواہشات چکنا چور ہوگئی ہیں۔ ایک خصوصی بیان میں انہوں نے کہاحکومتی اعدادوشمار بتا رہے ہیں کہ حسب روایت کئی منی بجٹ بھی لائے جائینگے، حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بجٹ سے پہلے ہی اضافہ کردیا تھا جبکہ ملک میں مہنگائی آسمان سے باتیں کررہی ہے،بجلی اور گیس کے موجودہ نرخ عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہیں

،عوام کو دو تین ماہ بعد پتہ چلے گا کہ انکے ساتھ کیا ہاتھ ہواہے،بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں کیا گیا اضافہ شلجم سے مٹی جھاڑنے کے مترادف ہے،حکومت کومہنگائی کے تناسب سے تنخواہوں میں اضافہ کرنا چاہئیے تھا،بجٹ کو قطعی عوام دوست نہیں کہا جاسکتا،ٹیکسوں کا مقررہ ہدف بھی پورا نہیں ہوسکا اور بڑے ٹیکس چوروں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے تمام اعلانات پانی کا بلبلہ ثابت ہوئے،تعلیم اورصحت کے فنڈز میں کمی قوم کیساتھ ظلم ہے ،حکومت بڑے بجلی چوروں کو بھی پکڑنے میں ناکام ہوچکی ہے اور قوم کا اربوں روپیہ لوٹنے والے ٹیکس اور بجلی چور خود حکومتی صفوں میں موجود ہیں،انہوں نے کہا بے روزگاری کے خاتمہ کیلئے مناسب اقدامات تجویز نہیں کئے جس سے نوجوان طبقات کی رہی سہی امیدیں بھی خاک میں مل گئی ہیں،غریب طلبا اور طالبات کیلئے تعلیمی وظائف اوردیگر مراعات کا اعلان نہ ہونا بھی ستم ظریفی ہے،محمد جمیل نے مزید کہاموجودہ حکمران بھی آئی ایم ایف اور دیگرعالمی مالیاتی کے تابع ہیں جنہیں ملک کے پسے ہوئے اور محروم طبقات سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...