زیادہ پارکنگ فیس وصول کرنے کے الزام میں مقدمات درج نہ کرنے کا حکم

زیادہ پارکنگ فیس وصول کرنے کے الزام میں مقدمات درج نہ کرنے کا حکم

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس فرخ عرفان خان نے سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ لاہور کو پرائیویٹ پلازوں کے مالکوں کے خلاف زیادہ پارکنگ فیس وصول کرنے کے الزام میں مقدمات درج کرنے سے روکتے ہوئے گاڑیوں کے پارکنگ کے مسائل کے حل اور قانونی تقاضوں کی عدم تکمیل کے معاملہ پر معاونت کے لئے سینئر وکلاء شہزاد شوکت اور وقار اے شیخ کو عدالتی معاون مقرر کردیا ہے ۔فاضل جج نے انہیں اس حوالے سے معاونت کرنے کی ہدایت بھی کی ہے کہ ہمارے قریبی ہمسائیوں سمیت دنیا بھر میں پارکنگ کے مسائل سے کیسے نمٹا جارہا ہے ۔عدالت نے عدالتی معاونین اور فریقین کے وکلاء سے 7مختلف نکات پر رپورٹ طلب کی ہے ،پہلا یہ کہ کیا سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ پرائیویٹ پلازہ مالکان کو سرکاری پارکنگ فیس وصول کرنے کی پابند بنا سکتی ہے اور یہ کہ پارکنگ فیس کو کیسے ضابطہ کے تحت لایا جاسکتا ہے ۔دوسرا یہ کہ کیا پلازوں میں ہنگامی راستوں سمیت مختلف مقاصد کے لئے قانون کے مطابق چھوڑی گئی جگہ کو ان ہی مقاصد کے لئے استعمال کیا جارہا ہے جس کے لئے نقشہ میں یہ جگہ مختص کی گئی ہے ۔تیسرا یہ کہ کیا حکومت کی طرف سے مقرر کی گئی پارکنگ فیس کا اطلاق ان جگہوں پر بھی ہوگا جن کا ذکر نکتہ نمبر2میں کیا گیا ہے ۔چوتھا یہ کہ لاہور پارکنگ کمپنی اورپرائیویٹ پارکنگ مالکان ایک دوسرے کے کاروباری حریف ہیں ،ایسی صور ت میں پارکنگ نرخ مقرر کرنے سے متعلق حکومتی نوٹیفکیشن کے آزاد مقابلے کی فضا پرکیا اثرات مرتب ہوں گے ۔پانچواں یہ کہ سڑکوں کو گاڑیوں اور موٹرسائیکلوں کی پارکنگ کے لئے استعمال کیا جارہا ہے اس بات کو کیسے یقینی بنایا جائے کہ یہ جگہ ٹریفک کے لئے کھلی رکھی جاسکے ۔چھٹا یہ کہ سڑکوں پر پارکنگ سٹینڈ قائم کرنے میں ضلعی حکومت کا کیا کردار ہے اور ساتواں یہ کہ ٹریفک کے بہاؤ میں رکاوٹ بننے والے ان پارکنگ سٹینڈز کے خلاف کیا کردار ادا کررہی ہے ۔عدالت نے اس کیس کی مزید سماعت کے لئے9جون کی تاریخ مقرر کی ہے ۔

مزید : علاقائی


loading...