عید الفطر پاکستانی فلموں کے درمیان زبردست مقابلہ متوقع

عید الفطر پاکستانی فلموں کے درمیان زبردست مقابلہ متوقع

  

خوشیوں کا تہوار عید الفطرپاکستانی فلمی صنعت کیلئے ایسا پر مسرت موقع ہوتا ہے جب سپر سٹا ر فنکاروں سے سجی اور دلچسپ موضوعات کا احاطہ کرتی ہیوی بجٹ فلمیں شائقین کی تفریح کیلئے سنیماؤں میں پیش کی جاتی ہیں ، رواں برس عید الفطر پر پاکستانی فلمی صنعت کی جانب سے فلم بینوں کو جن نئی فلموں کی عیدی دی جارہی ہے ان میں ’’ سات دن محبت ان ‘‘،’ ’ وجود ‘‘ ، ’’ آزادی‘‘ سمیت دیگر شامل ہیں لیکن ان میں مرکزی حیثیت رومانوی فلم ’’ سات دن محبت ان ‘‘ اور ایکشن ، سسپنس تھرلرسے بھرپور ’ ’ وجود ‘‘ کو حاصل ہے ۔ ڈسٹر ی بیوشن کلب کے زیر اہتمام پیش کی جانے والی دونوں فلموں کے ٹریلرز اور گیت ریلیز کئے جا چکے ہیں جنہیں سوشل میڈیا پر شائقین کی جانب سے بھرپور پذیرائی بھی حاصل ہوچکی ہے اور شائقین بھی بے صبری سے دونوں فلموں کا انتظار کر رہے ہیں ۔ ’’ سات دن محبت ان ‘‘ پاکستان کی جانب سے آسکر ایوارڈ کیلئے نامزد کی جانے والی فلم ’’ زندہ بھاگ ‘‘ سے شہرت حاصل کرنے والی ڈائریکٹر جوڑی مینو فرجاد کی نئی پیشکش ہے جس کی سٹار کاسٹ میں عصر حاضر کی سٹار فنکارہ ماہرہ خان اور مقبول فنکار شہریار منور شامل ہیں ، یہی نہیں فلم میں ٹی وی ڈراموں کی ہر دلعزیز آرٹسٹ حنا دلپذیر المعروف ’’ مومو‘‘ نے شہریار کی والدہ کے کردار میں فلم کی رونق بڑھائی ہے جبکہ سپر ماڈل اور فنکارہ میرا سیٹھی کی بطور اداکارہ یہ پہلی فلم ہے جس میں اسکا کردار بریڈ فورڈ انگلینڈ سے آئی پاکستانی لڑکی ’’ پرنسز سونو‘‘ کا ہے ۔ فلم کی ہائی لائٹ ورسٹائل فنکار جاوید شیخ کا منفرد گیٹ اپ ہے جو فلم میں ایک ’’جن‘‘ کے کردار میں جلوہ گر ہوکر ہیرو شہریار منور کی مدد کرتے نظر آئیں گے ۔ ایک دلچسپ کہانی پر مبنی اس فلم میں رومانس اور کامیڈی کے ساتھ فیملی اینٹرٹینمنٹ کے ان تمام عناصر کو شامل کیا گیا ہے جو عید الفطر کے تہوار پر شائقین دیکھنا پسند کرتے ہیں۔فلم کی پروڈکشن پاکستان کے معروف نشریاتی ادارے ’’ ڈان گروپ ‘‘ نے کی ہے جبکہ اس کی ڈسٹری بیوشن پاکستان میں فلموں کی ریلیز کے حوالے سے سب سے بڑے ادارے ڈسٹری بیوشن کے زیر اہتمام ہو رہی ہے ۔’’ سات دن محبت ان ‘‘ جیولر ی کاکام کرنے والے ایک سیدھے سادھے نوجوان ٹیپو (شہریارمنور) کی کہانی ہے جسکی زندگی میں معذور ماں ’’ مومو‘‘ کا عمل دخل ضرورت سے کچھ زیادہ ہوتا ہے ، وہیل چئیر تک محدود ہونے کے باوجود ٹیپو کے ہر معاملے میں ٹانگ اڑانا اسکی ماں اپنا جائز حق سمجھتی ہے ۔ ماہرہ خان نے فلم میں ٹیپو کی کزن ’’ نیلی‘‘ کا کردار اداکیاہے جس کی منگنی ایک مقامی گینگسٹر نصیر کن کٹا سے ہوچکی ہے تاہم اسکی پہلی محبت کزن ٹیپو ہی ہے لیکن ٹیپو کی ماں نیلی کی اپنے بیٹے کے ساتھ نزدیکی کو بالکل پسند نہیں کرتی۔ فلم کی کہانی اس وقت دلچسپ صورتحال اختیار کر لیتی ہے جب ٹیپو اپنے دوست ٹنگو ماسٹر کے کہنے پر معروف عامل سندباد جہازی سے ملتا ہے جو اُسے اپنی زندگی میں رومانس واپس لانے کیلئے ایک سکیم بتاتاہے یوں ٹیپو کی ملاقات دوارکا پرشاد یعنی جن کا کردار ادا کرنے والے فنکار جاوید شیخ سے ہوتی ہے اور کہانی ایک بالکل نیا موڑ اختیار کرلیتی ہے اس کے بعد آنے والوں سات دنوں میں پیش آنے والے واقعات فلم کی ہائی لائٹ کی صورت میں سامنے آتے ہیں ۔ فلم میں معروف فنکارہ میرا سیٹھی اور سپر ماڈل آمنہ الیاس نے بھی انتہائی پاور فل کردار اداکئے ہیں جبکہ اس کا میوزک بھی رفتہ رفتہ کامیابیوں کی سیڑھیاں چڑھتا جا رہا ہے۔

عید الفطر کے دنگل پر پیش کی جانے والی دوسری بڑی فلم ’’ وجود‘‘ پاکستان کے عالمی شہرت یافتہ فنکار جاوید شیخ کی بطور ڈائریکٹر نئی پیشکش ہے جسے انہوں نے لگ بھگ ایک دہائی کی بریک کے بعد بنایا ہے ، ترکی کی خوبصورت لوکیشنز پر فلمائی گئی ’’ وجود‘‘ اس لحاظ سے بھی منفرد فلم ہے کہ اس میں پاکستانی فلمی صنعت کے لیجنڈ فنکار ندیم بیگ اور شاہداپنے طویل کیرئیر کے باوجود پہلی بار جاوید شیخ کے ساتھ پردہ سیمیں پر جلوہ گر ہو رہے ہیں ۔ فلم کی لیڈ سٹار کاسٹ میں دانش تیمور اور سعیدہ امتیاز ، برینڈ مینجمنٹ کے حوالے سے معروف شخصیت فریحہ الطاف ، بیگم نوازش علی کے لازوال کردار سے شہرت حاصل کرنے والے علی سلیم ، باصلاحیت فنکارہ ، شاہین خان اور نئی فنکار جوڑی اسد محمود اور فائزہ خان شامل ہیں جبکہ بھارتی فنکارہ آدیتی سنگھ نے فلم میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے ۔ایکشن ، سسپنس اور تھرلرسے بھرپور فلم ’ ’ وجود ‘‘ میں دانش تیمور نے ایک پائلٹ کا کردار ادا کیا ہے جو اپنی محبت سعیدہ امتیاز کے ساتھ شادی کرکے نئی زندگی کا آغاز کرتا ہے ، اسی دوران دانش کو ترکی میں مقیم ایک معروف بزنس ویمن جیسیکا (آدیتی سنگھ) اپنے ذاتی پائلٹ کے طور پر ہائر کرلیتی ہے ۔ یہیں سے فلم کی کہانی دلچسپ صورتحال میں داخل ہوجاتی ہے کیونکہ جیسیکا اپنی دولت اور طاقت سے دانش کی زندگی پر کنٹرول کرنے کی کوشش کرتی ہے جس کے بعد پیش آنے والے واقعات میں دیگر فنکاروں کی پاورفل کرداروں میں انٹری ہوتی ہے ۔ فلم میں جاوید شیخ نے ولن یا جاسوس کا کردار کیا ہے اس حقیقت سے ابھی پردہ اٹھنا باقی ہے تاہم مضبوط کہانی ، دلفریب لوکیشنز اور بہترین فنکاروں کی موجودگی نے فلم کو چار چاند لگا دئیے ہیں جس کے باعث دن بدن فلم کے انتظار میں اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ فلمی حلقوں کا کہنا ہے کہ گذشتہ چند برسوں میں سنیما انڈسٹری میں ہونے والی ترقی نے فلم بزنس کے سرکٹ کو دوبارہ بحال کردیاہواہے جس کے باعث قومی امید ہے کہ عید الفطر کی چھٹیوں میں دونوں فلمیں شاندار بزنس کرنے میں کامیاب رہیں گی اور میٹھی حقیقی معنوں میں پاکستانی فلمی صنعت کیلئے خوشیوں کا پیغام لائے گی۔ دوسری جانب پاکستانی پروڈیوسرز اور فلم میکرز کی دیریہ خواہش کے حصول کیلئے ہونے والی کوششیں رنگ لے آئی ہیں اور حکومت پاکستان نے عید الفطر کے تہوار پر کسی بھارتی فلم کی نمائش پر پابندی لگا دی ہے یوں بھارتی سپر سٹار سلمان خان کی ایکشن سے بھرپور نئی فلم ’’ ریس تھری ‘‘ اب عید پر پاکستانی سنیماؤں کی زینت نہیں بن سکے گی اور پاکستانی فلموں کو بزنس کیلئے پوری مارکیٹ مل گئی ہے ۔ وفاقی حکومت کی جانب سے جاری ہونے والے نوٹیفیکیشن کے مطابق رواں برس عید الفطر اور اسکے بعد چودہ دنوں کے اندر کوئی بھارتی فلم نمائش کیلئے پیش نہیں کی جاسکے گی ۔ فلمی حلقوں نے حکومت کے اس اقدام کو خوش آئندہ قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ ایسے دلیرانہ فیصلوں کا براہ راست پاکستانی فلم پروڈیوسرز کو حاصل ہوگا کیونکہ غیر ملکی فلموں کی نمائش ہونے سے انہیں عید جیسے تہواروں پر بھی اپنی فلموں کیلئے مناسب شوز نہیں مل پاتے یوں انکی فلمیں منافع تو دور اپنی لاگت پوری کرنے میں بھی ناکام رہتی ہیں ۔ فلمی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت عید الفطر کی طرح دیگر اہم تہواروں جیساکہ عید الاضحی ، چودہ اگست اور کرسمس کے تہواروں پر بھی غیر ملکی فلموں کی نمائش پرپابندی لگا د ی جائے تاکہ مقامی پروڈیوسرز کو حوصلہ افزائی ہوسکے اور وہ بڑے تہواروں کیلئے ہیوی بجٹ فلمیں بنا کر شائقین کو معیاری تفریح فراہم کرسکیں ۔ عید الفطر کے تہوار پر پشتو اور پنجابی زبان کی متعدد فلموں کی پروڈکشن کا عمل تیزی سے مکمل کیا جارہا ہے جنہیں مقامی فلموں کے شائقین کیلئے سرکٹ کے چھوٹے سنیماؤں میں پیش کیاجائے گا ۔ تجزیہ نگاروں کو توقع ہے کہ عید الفطر کے ویک کے دوران پاکستانی فلمیں مجموعی طور پر 20کروڑ سے زائد کا بزنس کرنے میں کامیاب ہو سکتی ہیں اور فلموں کی کامیابی سے پاکستانی فلمی صنعت کی ترویج کے ساتھ ساتھ مقامی فنکاروں کو روزگار کے سلسلے میں فوائد حاصل ہوں گے۔ اس عید پر ریلیز ہونے وال؛ی دیگر فلموں میں ’’بینڈ نا باراتی‘‘،’’مارکیٹ‘‘،’’ملک بادشاہ‘‘،’’پیدا گیر‘‘،’’فیصلہ گجردا‘‘اور’’ضدی او بدمعاش‘‘شامل ہیں۔سینئر اداکار اچھی خان کی عید الفطر پر پانچ فلمیں سینما گھروں کی زینت بنیں گی۔ اچھی خان کے لئے عید الفطر کا تہوار دوہری خوشیاں لے کر آرہا ہے ۔ اس موقع پر ان کی پانچ فلمیں ریلیز ہوں گی جن میں دو پنجابی فلمیں ’’ملک بادشاہ ‘‘اور ’’فیصلہ گجر دا ‘‘،دو پشتو فلمیں ’’ضدی او بدمعاش ‘‘اور ’’پیدا گیر ‘‘جبکہ ایک اردو فلم ’’مارکیٹ ‘‘ شامل ہیں۔ اچھی خان واحد اداکار ہیں جن کو عید الفطر پر پانچ فلمیں ریلیز ہونے کا اعزاز حاصل ہو گا ۔

مزید :

ایڈیشن 2 -