پی پی 51(ن) لیگ اختلافات کا شکار شوکت منظور چیمہ کو متعدد شخصیات کی مخالفت کا سامنا

پی پی 51(ن) لیگ اختلافات کا شکار شوکت منظور چیمہ کو متعدد شخصیات کی مخالفت کا ...

  

وزیرآباد(مہرراشدجاوید مٹھو سے) پی پی51 سابق ایم پی اے چوہدری شوکت منظور چیمہ کو مسلم لیگ(ن) کی سرکردہ بااثر سیاسی شخصیات کی شدید مخالفت کا سامنا ہے،سابق تحصیل نائب ناظم میر ماجد علی سالار،امتیاز اظہر باگڑی،وائس چیئرمین بلدیہ ملک ارسلان انور بلوچ،یوتھ ونگ کے رہنماء عمران سنی کمبوہ،کونسلران خواجہ شعیب،ارشد محمود سلیمی و دیگر خم ٹھوک کر مخالفت میں آگئے ہیں،پانچ سالہ دور اقتدار میں مسلم لیگیوں کو نظر انداز کرنے اور ترقیاتی فنڈزمخالفین کی ایماء پر لگانے پر شوکت منظور کا یہ ہراول دستہ سخت نالاں ہے پارٹی کی طرف سے دوبارہ نامزدگی پر سخت ردعمل کا امکان ہے،پی پی51 سے 18 امیدواران نے پارٹی کو ٹکٹ کے حصول کیلئے رجوع کیا ہے۔ انٹرویو کے دوران امیدواران کی اکثریت نے قیادت کے سامنے بھی شدید الفاظ میں شوکت منظور چیمہ کے مخالفت کی،چوہدری شوکت منظور چیمہ کو ٹکٹ ملنے پر سابق ایم این اے جسٹس(ر)افتخار احمدچیمہ پہلے ہی الیکشن نہ لڑنے کا اعلان کرچکے ہیں،ضلعی صدر ن لیگ چوہدری مستنصر علی گوندل بھی درپردہ شوکت منظور کی مخالفت کرنے والے گروپ کی حمایت کرتے نظر آتے ہیں،چوہدری شوکت منظور چیمہ گروپ کے چیئرمین بلدیہ وزیرآباد بابو شعیب ادریس بھی مخمصے کا شکار ہیں انکی حمایت کرنے والے کونسلرز صغیر چٹھہ،نعیم ریاض چیمہ اور محمد شفیق بلا پہلوان پہلے ہی پی ٹی آئی کے امیدوار محمد احمد چٹھہ کی انتخابی مہم چلا رہے ہیں، مسلم لیگ (ن)میں اختلافات ختم نہ ہوئے تو الیکشن میں رزلٹ مختلف بھی آسکتے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -