حضرت علیؓ کی زندگی کعبہ سے شروع ہوکر مسجد میں ختم ہوئی،شاہد حسین

حضرت علیؓ کی زندگی کعبہ سے شروع ہوکر مسجد میں ختم ہوئی،شاہد حسین

  

لاہور (ایجوکیشن رپورٹر) امیر المومنین حضرت سید نا علی المرتضیٰ شیر خدا رضی اللہ تعالیٰ عنہ تاریخ اسلام کی وہ ممتاز شخصیت ہیں جو شجاعت وعدالت، علم وحلم اور ایثار وقربانی میں اپنا ثانی نہیں رکھتے۔ وہ ایک ہمہ جہت قدآور شخصیت تھے اور ان کے کارنامے آج بھی تاریخ اسلام کا ایک درخشندہ باب ہیں۔ ان خیالات کا اظہار بزم قادریہ جیلانیہ کے زیر اہتمام حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے یوم شہادت کے موقع پر پیر سید شاہد حسین گردیزی، پیر سید دلشاد حسین، سید عظمت علی شاہ، پیر سید فیض الحسن بخاری، پیر سید علی عابد حسینی، علامہ قاری عزیز حیدر، مفتی غلام حسن اور دیگر نے ملک بھر میں مختلف مقامات پر ہونے والے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا کعبہ میں پیدا ہونا اور مسجد میں شہید ہونا اس بات کا ثبوت ہے کہ دنیا میں ان کی زندگی ایک مثالی زندگی تھی جو کعبہ سے شروع ہوکر مسجد میں ختم ہوئی۔ گویا کہ دنیا میں ایسی زندگی ڈھونڈنے سے نہیں ملے گی جس کا آغاز اس سے بہتر ہو۔ علماء نے کہا کہ حضرت علی کے عدالتی فیصلے آج بھی آپ کی مومنانہ فراست کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔ آپؓ نے خداداد صلاحیت کی بناء پر نازک سے نازک مرحلوں پر مثالی فیصلے کئے۔

کہ دنیا آج بھی انہیں دیکھ کر حیرت میں گم ہے اور قیامت تک عدل کی ایک روشن مینار کی طرح چمکتے رہیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے دن منا کر صرف انہیں زبانی خراج تحسین پیش کرنا کافی نہیں بلکہ ان کی سیرت پر عمل پیرا ہونا ضروری ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -